ایکنک کی اسلام آباد سیف سٹی پراجیکٹ کی منظوری
30 دسمبر 2015 (22:37)
0

قومی اقتصادی کونسل کی انتظامی کمیٹی (ایکنک) نے اسلام آباد سیف سٹی پراجیکٹ کی نظرثانی شدہ لاگت کی منظوری دیتے ہوئے کوئلے کی ٹرانسپورٹیشن کیلئے ریلوے ویگنز کی خریداری و تیاری کی بھی اجازت دیدی۔ ایکنک کا اجلاس وفاقی وزیر خزانہ سینیٹر اسحاق ڈار کی زیر صدارت بدھ کو اسلام آباد میں ہوا۔ ایکنک کو بتایا گیا کہ وزارت داخلہ کا سیف سٹی پراجیکٹ قبل ازیں اس تاثر کے ساتھ منظور کیا گیا تھا کہ ایف بی آر ڈیوٹیز اور ٹیکسوں سے استثنیٰ دیدے گا لیکن ایف بی آر نے حکومتی پالیسی کے پیش نظر ٹیکس میں چھوٹ نہیں دی جس کے بعد متعلقہ وزارت نے ٹیکسوں اور ڈیوٹیوں کی شمولیت کیلئے پراجیکٹ کی لاگت پر نظرثانی کی۔ اجلاس نے تفصیلی غور و خوض کے بعد منصوبے کی 15.865 ارب روپے کی نظرثانی شدہ لاگت کی منظوری دی جس میں ٹیکسوں اور ڈیوٹی کی ادائیگی کیلئے 4 ارب روپے بھی شامل ہیں۔ یہ منصوبہ تکمیل کے قریب ہے جس میں شہریوں اور ان کی املاک کے سیکورٹی خطرات اور دہشت گردی کے واقعات سے تحفظ کیلئے فیزیکل انفراسٹرکچر اور متعلقہ سہولیات شامل ہیں۔ یہ منصوبہ ابتدائی طور پر وفاقی دارالحکومت کیلئے تیار کیا گیا ہے جو موثر سیکورٹی فریم ورک فراہم کرے گا۔ اس کے تحت قانون نافذ کرنے والے ادارے جدید ٹیکنالوجیز سے استفادہ کرینگے۔ ایکنک نے وزارت ریلویز کی تجویز پر کوئلے کی ٹرانسپورٹیشن (فیزII) کیلئے 585 ویگنز اور 20 بوگیوں کی خریداری و تیاری کی بھی منظوری دی جس پر لاگت کا تخمینہ 5 ارب 86 کروڑ 10 لاکھ روپے لگایا گیا ہے۔ اس منصوبے سے پاکستان ریلویز کوئلے پر چلنے والے پاور پلانٹس کیلئے کراچی سے 6 ملین ٹن کوئلہ ٹرانسپورٹ کرنے کی ضرورت کو پورا کر سکے گا۔ اس موقع پر وزیر خزانہ نے سال 2015ء کے دوران ایکنک کے اجلاسوں میں فعال کردار ادا کرنے پر ارکان کا شکریہ ادا کیا اور امید ظاہر کی کہ ایکنک کے ممبران نئے سال میں بھی اسی جذبے کے ساتھ کام جاری رکھیں گے۔