اگلے مالی سال کے لئے سالانہ ترقیاتی منصوبے میں حکومت نے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے کیلئے پانچ ارب دو کروڑ روپے مختص کئے ہیں۔

پسماندہ علاقوں کی خواتین کوویمن ڈیجیٹل ایمپاورمنٹ پروگرام کے تحت کمپیوٹر کی تربیت دی جائیگی
29 جون 2016 (13:03)
0

پسماندہ علاقوں سے تعلق رکھنے والی پانچ ہزار سے زائد خواتین کو اگلے مالی سال کے دوران وویمن ڈیجیٹل ایمپاورمنٹ پروگرام کے تحت کمپیوٹر کی تربیت دی جائے گی۔

اگلے مالی سال کے لئے سالانہ ترقیاتی منصوبے میں حکومت نے انفارمیشن ٹیکنالوجی کے شعبے کیلئے پانچ ارب دو کروڑ روپے مختص کئے ہیں جس میں ای گورنمنٹ اور انسانی وسائل کی ترقی کی رفتار کو تیز کرنے پر توجہ مرکوز کی گئی ہے تاکہ عوام کوحکومت کی طرف سے فراہم کی گئی خدمات تک رسائی کی سہولت فراہم کی جاسکے۔
اس سلسلے میں بعض بڑے منصوبے شروع کئے جائیں گے جن میں سافٹ وئیر ٹیکنالوجی پارک، نیشنل ڈیٹا سنٹر کا قیام اور ہائی ریزولویشن ریموٹ سینسنگ سیٹلائٹ جسے منصوبے شامل ہیں جس کا مقصد قدرتی آفات سے محفوظ رہنے کے لئے انتظامات میں مدد فراہم کرنا ہے جس میں سیلاب کی پیشنگوئی کرنا اور سیلابوں سے ہونے والے نقصانات کا جائزہ لگانا ہے۔
انفارمیشن ٹیکنالوجی کی وزارت بھی خیبرپختونخوا اور بلوچستان کے غیر مراعات یافتہ ایک سو72 علاقوں میں موبائل فون کی سہولت فراہم کرکے شہری اور دیہی طبقات کے درمیان آئی ٹی کے فرق کو کم سے کم کرنے پر توجہ دے رہی ہے۔
وزارت عوام کی اطلاعاتی اور مواصلاتی ٹیکنالوجی تک رسائی کیلئے پانچ سو یونیورسل ٹیلی سنٹرز کے قیام کی بھی منصوبہ بندی کررہی ہے۔