Monday, 13 July 2020, 10:09:32 am
بھارت کشمیریوں کےحق خود ارادیت کی جدوجہد کو دبانے کیلئے خواتین کی بے حرمتی کو بطور جنگی ہتھیار استعمال کر رہا ہے،کے ایم ایس
May 29, 2020

مقبوضہ کشمیر میں بھارت حق خود ارادیت کے ناقابل تنسیخ حق کے حصول کی کشمیریوں کی جدوجہد کو دبانے کیلئے خواتین کی بے حرمتی کو ایک جنگی آلے کے طور پر استعمال کر رہا ہے۔
شوپیان میں پیش آنے والے دو خواتین کی عصمت دری اور قتل کے المناک واقعے کے گیارہ برس مکمل ہونے پر آج کشمیر میڈیا سروس کے ریسرچ سیکشن کی طرف سے جاری کر دہ ایک تجزیاتی رپورٹ میں کہا گیا کہ مقبوضہ کشمیر میں خواتین بھارتی ریاستی دہشت گردی کی بدترین شکار ہیں۔
رپورٹ میں کہا گیا کہ بھارتی فوجیوں نے جنوری 1989سے اب تک 11ہزار 2سو 4خواتین کی بے حرمتی کی ہے۔
کل جماعتی حریت کانفرنس کے ترجمان نے آج سرینگر سے جاری ایک بیان میں کہا کہ بھارت کشمیری خواتین کو تحریک آزادی میں انکے سرگرم کردار کی پاداش میں نشانہ بنارہا ہے۔
جموںوکشمیر لبریشن فرنٹ کے قائمقام چیئرمین عبدالحمید بٹ نے آج پارٹی کے یوم تاسیس پر ویڈیو کانفرسنگ کے ذریعے منعقدہ ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کشمیریوں نے اپنے کاز کیلئے بے مثال قربانیاں دی ہیں اور دنیا کی طاقت کوئی انکی آزادی کی راہ میں رکاوٹ نہیں بن سکتی۔
ادھر بھارتی پولیس نے آصف احمد ڈار اور مزمل احمد پیر نامی دو نوجوانوں کو ضلع کپواڑہ کے علاقے پنڈٹپورہ کرالہ گنڈ میں ایک چیک پوسٹ سے گرفتار کر لیا۔
پولیس نے ان پر مجاہد تنظیم '' حزب المجاہدین '' کے ساتھ کام کرنے کا الزام عائد کیا ہے۔