ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں جاری مظالم سے دنیا کی توجہ ہٹانے کیلئے مختلف حربے استعمال کر رہا ہے۔

بھارت کو جنگ بندی کا احترام کرنا چاہیے:پاکستان
28 اکتوبر 2016 (18:00)
0

پاکستان نے کہا ہے کہ بھارت کو جنگ بندی کا احترام کرنا چاہیے اور شہر یوں اور ان کی املاک کو نشانہ بنانے سے گریز کرنا چاہیے ۔
دفترِ خارجہ کے ترجمان نفیس زکریا نے جمعہ کے روز اسلام آباد میں اپنی ہفتہ وار نیوز بریفنگ میں کہا کہ بھارت مقبوضہ کشمیر میں جاری مظالم سے دنیا کی توجہ ہٹانے کے لیے ایسے حربے استعمال کر رہا ہے۔
انہوں نے کنٹرول لائن اور ورکنگ بائونڈری پر بھارت کی طرف سے جنگ بندی کی خلاف ورزیوں کی بھی شدید مذمت کی ۔
ترجمان نے کہا کہ بھارت تیزی سے اپنے ایٹمی پروگرام کو توسیع دے رہا ہے جوعلاقائی اور عالمی امن کے لیے سنگین خطرہ ہے۔
انہوں نے کہا کہ بھارتی ایٹمی پروگرام میں اس تیزی کی وجہ نیوکلیئر سپلائرز گروپ کی جانب سے 2008میں بھارت کو دی گئی رعایت ہے جس سے ایٹمی عدم پھیلائو کے معاہدے کی ساکھ اور اسکی کار کردگی متاثر ہوئی ہے اور اس سے خطے کے سٹریٹجک توازن پر بھی منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔
ایک سوال کے جواب میں دفترِ خارجہ کے ترجمان نے کہا کہ پاکستان میں بھارتی مداخلت ایک ثابت شدہ امر ہے اور اس سلسلے میں ہمارے پاس ناقابلِ تردید ثبوت موجود ہیں۔
انہوں نے کہا کہ بھارتی جاسوس کلبھوشن یادیو سے ملنے والے شواہد کو ایک دستاویز کی شکل دی جارہی ہے جو مناسب وقت پر اقوام ِ متحدہ کے سیکرٹری جنرل کو پیش کی جائے گی۔
ایک سوال کے جواب میں ترجمان نے ایک بار پھر واضح کیا کہ پاکستان دہشتگرد گروپوں کے خلاف بلا امتیاز کاروائی کر رہا ہے ۔
انہوں نے کہا کہ ہم اپنی سر زمین کسی دوسرے ملک کے خلاف استعمال نہیں ہونے دیں گے۔

انہوں کہا پاکستان درحقیقت غیر ملکی فنڈنگ لینے والے دہشتگرد و عناصر کا شکار ہے اور سانحہ کوئٹہ اس کا واضح ثبوت ہے۔
انہوں نے کہا کہ اگست میں حقانی گروپ کے چار سنٹر کمانڈر افغانستان میں مارے گئے جو ظاہر کرتے ہیں کہ حقانی نیٹ ورک کہا موجود ہے ۔
بھارت میں ہارٹ آف ایشیاء کانفرنس میں شرکت کے پاکستان کے فیصلے کے بارے میں ترجمان نے کہا کہ اس کانفرنس کامقصد علاقائی ملکوں کے تعاون سے افغانستان میں امن و استحکام قائم کرنا ہے۔
انہوں نے کہا پاکستان چارفریقی رابطہ گروپ کی طرف سے افغان متحارب گروپوں کو مذاکرات کی میز پر لانے کی کوششوں کی حمایت کرتا ہے۔