بھارت کا مقبوضہ کشمیرمیں گوانتاناموبے کی طرز پرایک الگ جیل بنانے کافیصلہ
28 مئی 2016 (15:27)
0

بھارت نے مقبوضہ کشمیرمیں گوانتاناموبے کی طرز پرایک الگ جیل بنانے کافیصلہ کیاہے۔ذرائع ابلاغ کی رپورٹوں میں کہاگیاہے کہ اس جیل میں حریت رہنمائوں، کارکنوں اورآزادی کی جاری تحریک سے متعلق لوگوں کورکھاجائے گا۔
اس بات کاانکشاف بڈگام میں ایک عدالت کی طرف سے بھارتی فوج کے ہاتھوں سینئرحریت رہنمامسرت عالم بٹ کوغیرقانونی اورماورائے عدالت زیرحراست رکھنے پرکڑی تنقید کے کچھ دن بعد ہواہے۔جس میں عدالت نے قراردیاتھاکہ ابو Gharaib اورگوانتاناموبے جیسی صورتحال برداشت نہیں کی جائے گی۔

ادھر مقبوضہ کشمیر کے علاقے جموں میں مسلمان برادری کے ارکان نے کٹھ پتلی وزیرجنگلات چودھری لال سنگھ کی طرف سے مسلمانوں کو1947ء جیسے قتل عام کی دھمکی دینے پراحتجاج کیااور حکام سے ان کیخلاف ایف آئی آر درج کرنے کامطالبہ کیاہے۔مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے مقررین نے کہاکہ مسلمانوں کے قتل عام کی دھمکی دینے والے وزیرکیخلاف تاحال مقدمہ درج نہ ہونا افسوسناک ہے۔انہوں نے کہاکہ حکام کوجموں کے مسلمانوں کے جذبات کوسمجھنا چاہیے جوکٹھ پتلی وزیر کاہدف ہیں۔
انہوں نے خبردارکیاکہ مسلمان انتظامیہ کے ردعمل کاانتظار کریں گے اوراگر لال سنگھ کیخلاف مقدمہ درج نہ کیا گیا تو وہ اپنی مزاحمتی تحریک تیز کردینگے۔