ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ پاکستان کشمیر کے نصب العین کی حقانیت پر پختہ یقین رکھتا ہے

 امریکا بھارت مشترکہ اعلامیہ، جنوبی ایشیا کی کشیدہ صورتحال مزید خراب ہوگی،دفتر خارجہ
28 جون 2017 (19:03)
0

پاکستان نے کہا ہے کہ امریکہ اور بھارت کے مشترکہ بیان سے جنوبی ایشیا کی پہلے سے کشیدہ صورتحال مزید خراب ہو گی۔
دفترخارجہ کے ترجمان نے ایک بیان میں کہا کہ مشترکہ بیان سے خطے میں کشیدگی اورعوام استحکام کی اہم وجوہات کے حل میں کوئی مدد نہیں ملے گی۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان کشمیر کے نصب العین کی حقانیت پر پختہ یقین رکھتا ہے اور کشمیری عوام کی حق خودارادیت کی پرامن جدوجہد کی حمایت کرتا ہے جس کا وعدہ عالمی برادری نے اقوم متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے ذریعے کئی بار کیا۔
ترجمان نے کہا کہ کشمیریوں کی پر امن جدوجہد کو دہشتگردی کے ساتھ جوڑنے کی کوئی بھی کوشش اور حق خودارادیت کی حمایت کرنے والے افراد کو دہشتگرد قرار دینا قطعی ناقابل قبول ہے۔
انہوں نے بھارت میں مذہبی اقلیتوں پرظلم وتشدد اور مقبوضہ کشمیر میں نہتے کشمیریوں کے خلاف بدترین ہتھکنڈوں کی بھی مذمت کی ۔
بیان میں کہاگیاکہ پاکستان بھارت کے ساتھ تمام تصفیہ طلب مسائل خصوصاً جموں وکشمیر کا مسئلہ پرامن طریقوں اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادادوں کے مطابق حل کرنے کیلئے تیار اور پرعزم ہے ۔
دہشت گردی کے حوالے سے بیان میں کہاگیا ہے کہ پاکستان اس ناسور کا سب سے بڑاشکار ہے اوراس نے اس کے خاتمے کیلئے بھاری جانی ومالی نقصان برداشت کیا جس کا مقابلہ کوئی ملک نہیں کرسکتا ۔
ترجمان نے کہاکہ بھارت نے دہشت گرد گروپ تحریک طالبان کسی معاونت کسی اور اسے پاکستان کے خلاف استعمال کیا ۔
انہوں نے کہاکہ پاکستان کو بھارت کو جدید جنگی سازوسامان کی ضرورت پر بھی گہری تشویش ہے کیونکہ اس سے جنوبی ایشیاء میں سٹرٹیجک توازن اور استحکام کو خطرہ لاحق ہے ۔