قراردادوں میں تحریک انصاف کے بغیر چھٹی غیر حاضررہنے والے 28ارکان کی نشستیں خالی قرار دینے کے لئے کہاگیا ۔

قومی اسمبلی: پی ٹی آئی کےخلاف ایم کیوایم اورجمعیت علمائے اسلام (ف)کی قراردادیں موخر
28 جولائی 2015 (15:31)
0

قومی اسمبلی نے منگل کو ایم کیوایم اور جمعیت علماء اسلام (ف) کے ارکان کی طرف سے پیش کردہ دو قراردادیں آئندہ نجی کارروائی کے دن کیلئے موخر کردی ہیں جن میں تحریک انصاف کے ان اٹھائیس ارکان کی نشستیں خالی قراردینے کیلئے کہاگیا ہے جو بغیر چھٹی لئے مسلسل چالیس روز تک غیرحاضر رہے ہیں۔ وزیرخزانہ اسحق ڈار نے کہاکہ ہم باہمی مشاورت سے اس مسئلے کو حل کرنا چاہتے ہیں وزیرخزانہ کے اصرار اورایوان کی رائے لینے کے بعد سپیکر نے قراردادوں کوموخرکردیا۔


اس سے پہلے ایک نکتہ اعتراض پر قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے کہاکہ تحریک انصاف کے اراکین کے استعفوں کے معاملے کا ایک ہی بار فیصلہ کرلیناچاہیے۔ شاہ محمود قریشی نے مطالبہ کیاکہ ان قراردادوں کوموخرنہ کیاجائے اوراس سلسلے میں فیصلہ کیاجاناچاہیے۔ انہوں نے کہاکہ ہم نے جوڈیشل کمیشن کا فیصلہ تسلیم کیا ہے اوراپنا کردارادا کررہے ہیں۔ ایم کیوایم کے ارکان آصف حسنین ، کنورنوید جمیل اوررشید گوڈیل نے کہاکہ یہ کوئی معمولی مسئلہ نہیں ہے اسے قانون اور آئین کے مطابق حل کیاجاناچاہیے۔

گھروں میں بجلی چوری سے متعلق قراردادپر اظہارخیال کرتے ہوئے وزیرخزانہ نے کہاکہ حکومت بجلی کی مستقبل کی ضروریات کومدنظررکھتے ہوئے بجلی کے طویل مدت منصوبوں پر کام کررہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ ان منصوبوں میں دیامیر بھاشا، داسو ، ایٹمی منصوبے اور چین پاکستان اقتصادی راہداری کے تحت توانائی کے منصوبے شامل ہیں۔


وفاقی وزیر نے کہاکہ اس وقت 265 ارب روپے کا گردشی قرضہ ہے اور حکومت اس مسئلے کے مستقل حل کیلئے ترجیحی بنیادوں پر کام کررہی ہے۔ شیخ رشید احمد کی طرف سے اٹھائے گئے نکات کا جواب دیتے ہوئے وزیرخزانہ اسحق ڈار نے ایوان کو بتایا کہ حکومت 2017ء تک دس ہزار چھ سو تین میگاواٹ بجلی قومی گرڈ میں شامل کرنے کیلئے جامع منصوبے پر عمل پیرا ہے ۔


ایک توجہ دلائو نوٹس کاجواب دیتے ہوئے پانی وبجلی کے وزیر مملکت عابد شیر علی نے کہاکہ ضلع چار سدہ ، مردان اور لکی مروت میں تین سو بیاسی ٹرانسفارمر تبدیل کئے گئے ہیں۔
ایوان کا اجلاس اب بدھ کی صبح ساڑھے دس بجے ہوگا ۔