کشمیری رہنمائوں نے وزیراعظم نواز شریف کی طرف سے اقوام متحدہ میں مسئلہ کشمیر کے بارے میں پاکستان کا موقف پیش کرنے کو سراہا ۔

کشمیری رہنماؤں کا وزیراعظم نوازشریف کے مسئلہ کشمیر کے جرات مندانہ موقف کا خیرمقدم
27 ستمبر 2014 (20:58)
0

کشمیر ی رہنماؤں نے وزیراعظم محمد نواز شریف کے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی سے خطاب کے دوران مسئلہ کشمیر کے بارے میں جرات مندانہ اور واضح موقف کا خیرمقدم کیا ہے۔ آج (ہفتہ) مظفرآباد میں صحافیوں سے باتیں کرتے ہوئے آزادجموں وکشمیر کے وزیراعظم نے کہا کہ نواز شریف نے کشمیریوں کے نصب العین کو موثر انداز میں پیش کیا۔ آزادکشمیر قانون ساز اسمبلی میں قائد حزب اختلاف راجہ فاروق حیدر خان نے وزیراعظم پاکستان کے خطاب کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ اس سے کشمیریوں کی جدوجہد آزادی کو نئی تقویت ملے گی۔


جماعت اسلامی آزادکشمیر کے امیر عبدالرشید ترابی نے کہا کہ وزیر اعظم نے اپنے خطاب میں پاکستانی اور کشمیری عوام کے امنگوں کی ترجمانی کی ہے۔ ایک اور کشمیری رہنماء سردار خالد ابراہیم نے بھی وزیراعظم کی طرف سے اقوام متحدہ میں مسئلہ کشمیر کے بارے میں پاکستان کا موقف پیش کرنے کو سراہا ہے۔

امور کشمیر اور گلگت بلتستان کے وزیر برجیس طاہر نے کہا ہے کہ وزیراعظم نواز شریف نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی میں اپنی تقریر میں مسئلہ کشمیر کو موثر انداز میں اجاگر کیا ہے۔
ریڈیو پاکستان کو ایک انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نے اپنے خطاب میں کشمیری عوام کی امنگوں کی حقیقی معنوں میں ترجمانی کی ہے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ کشمیر پاکستان اور بھارت کے درمیان اہم مسئلہ ہے اور اسے مذاکرات کے ذریعے حل کیا جانا چاہئیے۔انہوں نے کہا کہ بھارت کی طرف سے خارجہ سیکرٹری سطح کے مذاکرات کی منسوخی سے دنیا کو اچھا پیغام نہیں ملا۔


برجیس طاہر نے عالمی برادری اور انسانی حقوق کی تنظیموں پر زور دیا کہ وہ دیرینہ مسئلہ کشمیر کو کشمیری عوام کی امنگوں کے مطابق حل کرنے کے لئے مذاکرات شروع کرنے کیلئے بھارت پر دبائو ڈالیں۔ ایک سوال پر وفاقی وزیر نے کہا کہ اگر اقوام متحدہ مشرقی تیمور میں ریفرنڈم کرا سکتا ہے تو اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق مقبوضہ کشمیر میںا ستصواب رائے کیوں نہیں کرایا جاسکتا۔

 

مقبوضہ کشمیر میں کل جماعتی حریت کانفرنس کے رہنمائوں نے اقوام متحدہ میں کشمیر کے بارے میں پاکستانی وزیراعظم کے بیان کاخیرمقدم کرتے ہوئے اسے حقیقت پسندانہ قراردیا ہے۔ 

میرواعظ عمرفاروق، سید علی گیلانی اور محمد یاسین ملک نے ایک بیان میں کہاکہ نوازشریف نے جنرل اسمبلی میں اپنے خطاب میں کشمیر کا تنازعہ کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق حل کرنے پرزوردیا۔ میرواعظ عمرفاروق نے بھارتی رہنمائوں پرزوردیا کہ وہ حقیقت پسندانہ سوچ اپناتے ہوئے یہ دیرینہ تنازعہ ہمیشہ کیلئے حل کریں۔


سید علی گیلانی نے کہاکہ پاکستان نے عالمی سطح پر ہمیشہ کشمیر کے نصب العین کی حمایت کی ہے اوریہ حمایت کشمیریوں کیلئے ہمیشہ تحریک کا باعث رہی ہے۔ ادھر نامعلوم مسلح افراد نے سری نگر کے علاقے صفا کدل میں ایک بھارتی فوجی کو گولی مارکرہلاک کردیا۔ 

نیویارک میں کشمیر کے بارے میں اسلامی تعاون تنظیم کے رابطہ گروپ کے اجلاس میں کشمیر کے دیرینہ مسئلے کے منصفانہ حل پرزوردیاگیا ہے۔ او آئی سی کے سیکرٹری جنرل نے اجلاس کی صدارت کی اجلاس میں کشمیری نمائندے اشتیاق حمید نے کہاکہ بھارت کشمیری عوام کے خلاف اپنے مظالم بند کرے۔ انہوں نے کہاکہ مقبوضہ کشمیر کے عوام حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کا سامنا کررہے ہیں۔