متبادل توانائی ترقیاتی بورڈ کے چیف ایگزیکٹو انے ریڈیو پاکستان کو ایک انٹرویو میں بتایا کہ متبادل توانائی کی موجودہ گنجائش 1350 میگاواٹ ہے۔

File Photo

 قابل تجدید توانائی کے ذرائع سے اگلے ڈیڑھ سال میں1000میگاواٹ بجلی قومی گرڈ میں شامل کی جائیگی
27 جون 2017 (10:50)
0

سورج ہوا اور گنے کے پھوک سمیت قابل تجدید توانائی کے دیگر ذرائع سے اگلے ڈیڑھ سال میں ا یک ہزار میگاواٹ سے زائد بجلی قومی گرڈ میں شامل کی جائے گی۔متبادل توانائی ترقیاتی بورڈ کے چیف ایگزیکٹو امجد علی اعوان نے ریڈیو پاکستان کے نمائندے زاہد حمید کو ایک انٹرویو میں بتایا کہ متبادل توانائی کی موجودہ گنجائش ایک ہزار تین سو پچاس میگاواٹ ہے۔
اس میں سے نوے فیصد سے زائد حکومت کے دور میں نصب کی گئی، انہوں نے کہا کہ ہم اس گنجائش کو اگلے سال کے آخر تک چوبیس سومیگاواٹ تک پہنچانا چاہتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ پون بجلی کی نصب کرد ہ گنجائش 790 میگاواٹ ہے جسے بڑھا کرایک ہزار دو سو چالیس میگاواٹ تک لے جایا جائے گا جبکہ گنے کے پھوک سے بجلی کی موجودہ پیداوار ایک سو ساٹھ میگاواٹ سے بڑھا کر آٹھ سو میگاواٹ کرنے کا ہدف ہے۔
انہوں نے کہا ہوا سے بجلی پیدا کرنے کے منصوبے جھمپیر گھورو پون راہداری میں قائم کئے جارہے ہیں جس میں تیس ہزار میگاواٹ بجلی پیدا کرنے کی صلاحیت ہے۔ انہوں نے کہا پون راہداری صوبہ پنجاب اور بلوچستان میں بھی تلاش کی جارہی ہیں۔