27 جون 2016 (17:31)
0

پاکستان رواں سال ایک لاکھ بیس ہزار ٹن آم برآمد کرے گا جبکہ گزشتہ سال چوراسی ہزار ٹن آم برآمد کئے گئے تھے ۔
ان خیالات کا اظہار ٹریڈ ڈویلپمنٹ اتھارٹی کے چیف ایگزیکٹوآفیسر ایس ایم منیر نے تجارت کے بارے میں سینٹ کی قائمہ کمیٹی کو بریفنگ دیتے ہوئے کیا ۔
کمیٹی کا اجلاس پیر کے روز اسلام آبادمیں سینیٹر شبلی فراز کے زیرصدارت ہوا ۔
انہوں نے کہاکہ آسٹریلیا ، لیبیا ، ماریشیں اورجنوبی کوریا نے تیرہ سال کی پابندی کے بعد پاکستان سے آم درآمد کرنے کی اجازت دے دی ہے ۔
انہوں نے کہاکہ ان ملکوں خصوصا جاپان میں پاکستانی آم کی طلب میں نمایاں اضافہ ہوا ہے جس سے آم کی برآمد بڑھی ہے ۔
اجلاس کو بتایاگیا کہ پاک چین اقتصادی راہداری کی تکمیل سے چین اور وسطی ایشیائی ریاستوں کو سبزیوں اور تازہ پھلوں جیسی اشیاء کی برآمدات میں مزید اضافہ ہوگا ۔
کمیٹی کو بتایاگیا کہ تجارت کا ترقیاتی ادارہ پاکستانی راموں کی روسی زبان میں ڈبنگ کرا کے انھیں بھی وسطی ایشیائی ممالک میں متعارف کرارہا ہے ۔
وزیرتجارت خرم دستگیر نے بھی اجلاس میں شرکت کی ۔