Thursday, 19 September 2019, 05:26:29 am
سی پیک کے تحت خصوصی اقتصادی زونز پاکستان میں مجموعی اقتصادی ترقی میں اہم کردار ادا کرینگے،ژاؤلی جیان
April 27, 2019

پاکستان میں چین کے قائمقام سفیر Zhao-Lijian نے کہا ہے کہ پاک چین اقتصادی راہداری ایک خطہ ایک شاہراہ اقدام کا اہم ترین منصوبہ ہے اور چین کی حکومت اسے بہترین نمونے کے طور پر پیش کررہی ہے۔

ریڈیو پاکستان کے خصوصی نمائندے عبدالہادی مایار کو ایک خصوصی انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ سی پیک کے تحت مختصر عرصے میں بڑی تعداد میں منصوبے مکمل کئے گئے ہیں۔

سفیر نے کہا کہ گزشتہ چھ سال میں سی پیک کے تحت گیارہ منصوبے مکمل کئے گئے ہیں جبکہ دیگر گیارہ زیر تکمیل ہیں اس کے علاوہ متعدد منصوبے زیر غور ہیں۔

انہوں نے کہا کہ سی پیک کی چار ترجیحات ہیں جن میں بجلی گھر، بنیادی ڈھانچے کی ترقی، گوادر بندرگاہ کی جدت اور صنعتی ترقی شامل ہے۔

ژاؤلی جیان نے کہا کہ پاکستان میں گزشتہ پانچ سال میں بنیادی ڈھانچے اور توانائی کے مسائل حل کرنے کے ساتھ صنعتی ترقی کی بنیاد رکھی گئی۔ انہوں نے کہا کہ اگلے مرحلے میں پاکستان میں مزید صنعتی ترقی پر غور کیا جارہا ہے۔

سفیر نے کہا کہ پاکستان بھر میں خصوصی اقتصادی زون قائم کرنے کیلئے 9علاقوں کی نشاندہی کی گئی ہے ۔انہوں نے کہا کہ رشہ کئی ، قائداعظم صنعتی پارک اور دھابیجی اقتصادی زون ترجیحا بنائے جائینگے۔

انہوں نے یقین ظاہر کیا کہ وزیراعظم عمران خان کے دورہ چین کے فورا بعد رشہ کئی میں خصوصی اقتصادی زون کا سنگ بنیاد رکھا جائیگا۔

Zhao Jijian نے کہا کہ خصوصی اقتصادی زونز غیر ملکی زرمبادلہ کے ذخائر اور برآمدات میں اضافے کے ذریعے پاکستان کی مجموعی اقتصادی ترقی میں نمایاں کردار ادا کریںگے۔

قائمقام چینی سفیر نے کہا کہ ایک خطہ ایک شاہراہ جاری فورم کے اختتام پر توقع ہے کہ دونوں ملک کراچی سے پشاور مرکزی ریلوے لائن کو دورویہ کرنے کے معاہدے پر دستخط کریںگے۔

ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ سی پیک علاقائی اقتصادی ترقی کا منصوبہ ہے اور کسی بھی بڑے ملک کی شمولیت کا خیر مقدم کیا جائیگا۔

انہوں نے کہا کہ کروٹ پن بجلی گھر میں عالمی بنک اور متعدد منصوبوں میں قطری کمپنیوں کی سرمایہ کاری کی صورت میں تیسرے فریق کی شمولیت پہلے سے موجود ہے۔

آزاد تجارتی معاہدے کے دوسرے مرحلے کے بارے میں ایک سوال کے جواب میں جس پر جلد دونوں ملک دستخط کریں گے Zhao Lijian نے کہا کہ پاکستان پہلا ملک ہے جس کے ساتھ چین آزاد تجارتی معاہدے پر دستخط کرنے جارہا ہے انہوں نے کہا کہ دونوں ملک موجودہ ایف ٹی اے کو بہتر بنانے کیلئے رابطے میں ہیں اور اس سلسلے میں مذاکرات کا گیارہویں اور آخری مرحلہ ہونے جارہا ہے۔

سفیر نے کہا کہ نئے ایف ٹی اے کے تحت چینی حکومت اپنی منڈیوں میں پاکستانی مصنوعات کو 90فیصد حصے کی پیشکش کررہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ چین پاکستان کو منڈیوں تک رسائی کا 65فیصد زیرو ٹیرف پر فراہم کرنے کا کہہ رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ نیا آزاد تجارتی معاہدہ زیادہ تر پاکستان کے حق میں ہے۔

بیجنگ میں جاری ایک خطہ ایک شاہراہ فورم کے بارے میں ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے سفیر نے کہا کہ اس فورم کا مقصد شراکت داری میں اس بات پر اتفاق رائے پیدا کرنا ہے کہ ایک خطہ ایک شاہراہ اقدام کو کیسے آگے بڑھایا جائے۔