نوازشریف نے اس بات پر افسوس ظاہر کیاکہ بعض عناصر اس موقع کو ذرائع ابلاغ پر سیاست کے لئے استعمال کررہے ہیں ۔

26 جون 2017 (20:33)
0

وزیر اعظم نوازشریف نے کہاہے کہ احمد پورشرقیہ آئل ٹینکر سانحے کی مناسب تحقیقات کرائی جائے گی ۔پیر کے روز بہاولپور میں حادثے کی جگہ کا دورہ کرنے کے بعد اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ مستقبل میں ایسے المناک حادثے سے بچنے کے لئے تحقیقات ضروری ہیں۔  انہوں نے کہاکہ تحقیقات میں دیکھاجائیگا کہ آئل ٹینکر کی حالت کیسی تھی اور ٹینکر کی مالک کمپنی کی ذمہ داری کیاتھی۔انہوں نے کہاکہ اس افسوسناک واقعہ کے باعث عیدالفطر کا پر مسرت موقع غم میں تبدیل ہوگیا ہے۔

نوازشریف نے اس بات پر افسوس ظاہر کیاکہ بعض عناصر اس موقع کو ذرائع ابلاغ پر سیاست کے لئے استعمال کررہے ہیں ۔
ریڈیو پاکستان بہاولپور کے نمائندے سجاد پرویز نے بتایاکہ وزیراعظم محمد نوازشریف نے وزیر اعلیٰ پنجاب شہباز شریف کے ہمراہ سانحے میں جاں بحق افراد کے لواحقین سے ملاقات کی اور ان کا غم بانٹا۔

اس موقع پر وزیراعظم نے واقعہ میں جاں بحق افراد کے حقیقی ورثاء میں 20، 20لاکھ جبکہ زخمیوں میں دس ، دس لاکھ روپے کے امدادی چیک تقسیم کئے ۔
انہوں نے کہاکہ امدادانسانی زندگی کا متبادل نہیں ہوسکتی تاہم اس کا مقصدمتاثرہ خاندانوں کی مشکلات کو کم کرناہے۔انہوں نے تمام زخمی افراد کوان کی صحت یابی  کے بعداور جاں بحق افراد کے ورثاء کو سرکاری نوکریاں دینے کا بھی اعلان کیا۔

قبل ازیں وزیراعظم نواز شریف آئل ٹینکر کے افسوس ناک حادثے کے بعد اپنا برطانیہ کا دورہ مختصر کرکے بہاولپور پہنچے تھے جہاں انہوں نے المناک حادثے کی جگہ کا دورہ کیا۔

وزیراعظم  کو   بہاولپور میں احمد پور شرقیہ آئل ٹینکر سانحے کے بارے میں تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ کمشنر بہاولپور ثاقب ظفر نے وزیراعظم کو سانحہ اور امداد کی کارروائیوں سے متعلق آگاہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ 255 ہزار لیٹر تیل سے بھرا ٹینکر کراچی سے بہاولپور  آرہا تھاجو احمد پور شرقیہ کے قریب الٹ گیا جس پر مقامی لوگوں نے ٹینکر سے بہتا ہوا تیل جمع کرنا شروع کردیا اس دوران ٹینکر میں آگ لگ گئی اور دھماکے سے پھٹ گیا جس کے نتیجے میں 152 افراد جاں بحق اور 125 سے زائد زخمی ہوئے۔

وزیراعظم نے زخمیوں کو علاج معالجے کی ہر ممکن بہترین سہولتیں فراہم کرنے کی ہدایت کی ۔ پنجاب کے وزیراعلیٰ شہباز شریف نے بھی بریفنگ میں شرکت کی ۔

ادھر احمد پور شرقیہ میں آئل ٹینکر کے سانحے میں جاں بحق ہونے والوں کی تعداد بڑھ کر ایک سو باون ہوگئی ہے جبکہ چالیس زخمیوں کی حالت تشویش ناک ہے۔