نواز شریف نے کہاکہ قومی سلامتی پالیسی میں تمام سیاستدانوں کی تجاویز شامل کی جائینگی
   

26 فروری 2014 (18:26)
0

وزیراعظم نواز شریف نے یقین دلایا ہے کہ دہشت گردی کے مسئلے سے نمٹنے کے لئے تمام پارلیمانی رہنماؤں کو ایک اجلاس میں مدعو کیا جائے گا۔



قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ کی طرف سے نکتہ اعتراض کے جواب میں انہوں نے کہا کہ دہشت گردی سے نمٹنے کے لئے حکومتی حلقوں میں کوئی ابہام نہیں ہے ۔ وہ اس مسئلے پر پارلیمانی رہنماؤں کی تجاویز حاصل کرنا چاہتے ہیں۔


 


جامع قومی سلامتی پالیسی کی تیاری پر وزیر داخلہ کے اقدامات کو سراہتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ یہ حتمی دستاویز نہیں ہے ۔ حزب اختلاف اور حکومتی بنچوں سے مفید سفارشات بھی اس میں شامل کی جا سکتی ہیں۔


 


انہوں نے کہا کہ یہ کسی سیاسی جماعت کی پالیسی نہیں ہے بلکہ ملک کی پالیسی ہے اور ہر ایک کو اسے بہتر بنانے کی کوشش کرنی چاہئے ۔
نواز شریف نے کہا کہ جمہوریت ہی ملک کے تمام مسائل کا حل ہے۔


 


اس سے پہلے سید خورشید شاہ نے کہا کہ حزب اختلاف کی جماعتیں ملک کی سلامتی کیلئے حکومت کے شانہ بشانہ کھڑی ہیں۔


 


انہوں نے کہا کہ وہ کوئی ایسا قدم نہیں اٹھائیں گے جو جمہوری اقدار کے منافی ہو اور جس سے ملک کی سالمیت کو نقصان پہنچ سکتا ہو۔