انہوں نے  قومی سلامتی کے بارے میں ایک سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ کابینہ کی قومی سیکورٹی کمیٹی کا قیام قومی سیکورٹی پالیسی کی تیاری کی جانب پہلا قدم ہے ۔

26 دسمبر 2013 (17:55)
0

 امورخارجہ اور قومی سلامتی کے مشیر سرتاج عزیز نے کہا ہے کہ حکومت قومی سلامتی کی ایک جامع پالیسی وضع کر رہی ہے تاکہ ملک اورخطے میں امن واستحکام کویقینی بنایا جاسکے۔
انہوں نے جمعرات کے روز اسلام آباد میں قومی سلامتی کے بارے میں ایک سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ کابینہ کی قومی سیکورٹی کمیٹی کا قیام قومی سیکورٹی پالیسی کی تیاری کی جانب پہلا قدم ہے ۔
انہوں نے کہاکہ مجوزہ پالیسی کا بنیادی مقصد ہمسایہ ملکوں خاص طورپر بھارت کے ساتھ خیرسگالی تعلقات قائم کرنا ہے ۔
انہوں نے کہاکہ افغانستان سے غیرملکی فوجوںکے انخلاء کے بعد پاکستان  امریکہ کے ساتھ اپنے تعلقات پر نظر ثانی کرے گا  ۔
سرتاج عزیز نے کہاکہ پاکستان افغانستان میں کسی گروپ کو ترجیح نہیں دیتا  اور پاکستان  اس ملک میں محض امن چاہتا ہے جو پاکستان بلکہ پورے خطے کیلئے ناگزیر ہے۔