Monday, 13 July 2020, 08:58:55 am
پاکستان کورونا کے مریضوں کے علاج کیلئے طبی سامان کی تیاری میں خود کفیل ہو گیاہے، چیئرمین این ڈی ایم اے
May 26, 2020

ہنگامی امدادی ادارے کے چیئرمین لیفٹیننٹ جنرل محمد افضل نے کہا ہے کہ ملک بھر میں کورونا کے مریضوں کے علاج کیلئے وینٹی لیٹرز اور حفاظتی سامان کی کوئی قلت نہیں اور ہر چیز کنٹرول میں ہے۔

انہوں نے منگل کی سہ پہر اسلام آباد میں صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ اس وقت سرکاری اور نجی ہسپتالوں میں چار ہزار دو سو اور فوجی ہسپتالوں میں 500وینٹی لیٹر موجود ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ملک بھر میں صرف 128مریض وینٹی لیٹرز پر ہیں۔

انہوں نے کہا کہ امکان ہے کہ آئندہ ماہ کے آخر تک دوہزار وینٹی لیٹرز کی ضرورت ہوگی جس کیلئے ہنگامی منصوبہ وضع کیا جاچکا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اس وقت ہمارے گودام میں انتہائی نگہداشت یونٹ میں استعمال ہونے والے 183 وینٹی لیٹر موجود ہیں اور پاکستان نے مختلف ممالک سے تیرہ سو سے زائد وینٹی لیٹرز کی خریداری کیلئے آرڈر دیے  ہیں۔

ہنگامی امدادی ادارے کے چیئرمین نے کہا کہ امریکہ نے دوسو وینٹی لیٹر عطیہ کرنے کی بھی پیشکش کی ہے اور ان میں سے نصف جلد پاکستان پہنچ جائیںگے۔

انہوں نے کورونا کے مریضوں کیلئے بستروں کی دستیابی کے حوالے سے کہا کہ ہمارے پاس ملک بھر کے 365 ہسپتالوں کے انتہائی نگہداشت یونٹ میں دس ہزار سے زائد بستر موجود ہیں اور ان میں سے صرف دوہزار دوسوگیارہ زیر استعمال ہیں جو موجودہ گنجائش سے 20 فیصد کم ہے۔

اس کے علاوہ انتہائی نگہداشت یونٹ میں 679 بستروں کی گنجائش کے ساتھ 52 پرائیویٹ ہسپتالوں کو کسی بھی ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے تیار کرلیا گیا ہے۔

چیئرمین نے کہا کہ کورونا کا کوئی بھی مریض جسے ملک کے کسی بھی ہسپتال میں بیڈ دینے سے انکار کیا جائے وہ 111157157 پر اپنی شکایت درج کراسکتا ہے۔

محمد افضل نے کہا کہ پاکستان کورونا کے مریضوں کے علاج کیلئے طبی سامان تیار کرنے میں خود کفیل ہوگیا ہے۔

انہوں نے ملک کے مختلف حصوں میں ٹڈی دل کے حملوں پر قابو پانے کی غرض سے ادارے کی کوششوں کی تفصیل بتاتے ہوئے کہا کہ اس سلسلے میں ملتان، بہاولپور، ڈیرہ غازی خان اور فیصل آباد ڈویژن کے علاوہ اوکاڑہ، بھکر اور لیہ کے اضلاع میں بڑے پیمانے پر کارروائی جاری ہے۔