اطلاعات ونشریات کے وزیر نے کہا کہ دھرنوں سے ترقی کا عمل سست روی کا شکار ہو گیا ہے۔

دہشت گردی کوجڑسےاکھاڑنےکیلئےقوم متحد ہے:پرویزرشید
25 اکتوبر 2014 (15:10)
0

اطلاعات ونشریات کے وزیر پرویز رشید نے کہا ہے کہ دھرنوں سے ملکی معیشت کو بہت نقصان پہنچا ہے اور ترقی کا عمل سست روی کا شکار ہو گیا ہے۔
آج (ہفتہ) اسلام آباد میں صحافیوں سے باتیں کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ چین توانائی کے منصوبوں میں سرمایہ کاری کرنا چاہتا ہے لیکن دھرنوں کے باعث چین کے صدر کا دورہ ملتوی کرنا پڑا۔ انہوں نے کہا کہ قطر بھی پاکستان میں سرمایہ کاری کرنا چاہتا ہے لیکن اس کے سربراہ کا بھی دورہ ان دھرنوں کی وجہ سے منسوخ ہو گیا۔


پرویز رشید نے کہا کہ گزشتہ دو ماہ کے دوران دھرنوں کے باعث ہونے والے نقصانات پر قابو پانے کے لئے حکمت عملی وضع کی گئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنی غلطیوں سے سبق سیکھا ہے اور امید ہے کہ عمران خان بھی اپنی کوتاہیوں سے سبق سیکھیں گے۔


ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ صحافت پر حملہ جمہوریت پر حملہ ہے۔ وفاقی وزیر نے کہا کہ مسلح افواج دہشت گردی کے خاتمے کے لئے کامیاب کارروائی کر رہی ہیں۔ قوم دہشت گردی کے خاتمے کے لئے متحد ہے۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ پاکستان آنے والے دنوں میں مزید محفوظ اور بہتر ملک بن جائے گا۔

 

دریں اثناء وزیر اطلاعات پرویزرشید نے جمعیت علماء اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن سے ملاقات کی۔ ان سے باتیں کرتے ہوئے وفاقی وزیر نے کہا کہ ملک سے دہشت گردی کو جڑ سے اکھاڑنے کیلئے قوم متحد ہے۔


پرویزرشید نے کہا کہ دہشت گردوں کی کمر توڑ دی گئی ہے اور وہ بھاگ رہے ہیں انہوں نے اعتماد کا اظہار کیا کہ پاکستان جلد دہشت گردوں سے چھٹکارا پاکر پرامن ملک بن جائے گا۔ اس موقع پر مولانا فضل الرحمن نے کہا کہ پاکستان کے دشمن ملک کا امن تباہ کرنے کی کوشش کررہے ہیں لیکن وہ اپنے مذموم عزائم حاصل کرنے میں کامیاب نہیں ہوں گے۔


پرویز رشید نے ملک میں جمہوری اقدار اور پارلیمنٹ کی بالادستی کے لئے مولانا فضل الرحمن کے کردار کو سراہا۔