صدر کا ازبکستان کی جانب سے ایک ہزار میگاواٹ بجلی فراہمی کی پیشکش کا خیر مقدم۔

 پاکستان ،ازبکستان کا 3سال میں تجارتی حجم30کروڑ ڈالر تک لیجانے کا عزم
24 جون 2016 (18:17)
0

پاکستان اور ازبکستان نے باہمی تجارتی حجم تین سال میں بڑھاکر تیس کروڑ ڈالر تک لے جانے کا عزم ظاہر کیا ہے۔

اس عزم کا اظہار جمعہ کے روز تاشقند میں صدرممنون حسین اور ازبکستان کے صدر اسلام کریموف کے درمیان ملاقات میں کیا گیا۔
دونوں رہنمائوں نے کہا کہ سہ ملکی تجارتی راہداری معاہدے سے علاقائی تجارت کو فروغ ملے گا۔
پاک چین اقتصادی راہداری کے حوالے سے ممنون حسین نے کہا کہ اس منصوبے سے علاقائی تعاون میں اضافہ ہوگا۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان اور ازبکستان کے درمیان تجارت اور توانائی کے شعبوں میں تعاون کے وسیع مواقع ہیں۔
انہوں نے پاکستان کو ایک ہزار میگا واٹ بجلی کی فراہمی کی ازبکستان کی پیشکش کا خیر مقدم کیا ۔
صدر نے ازبکستان کو تجارت کے لئے پاکستانی بندرگاہ استعمال کرنے کی پیشکش کی ۔
ممنون حسین نے کہا کہ ایک مستحکم اور پُر امن افغانستان پاکستان اور پورے خطے کے بہترین مفاد میں ہے۔
انہوں نے تمام فریقوں پر زور دیا کہ وہ افغانستان میں قیام امن کی کوششیں تیز کردیں۔
صدر ممنون حسین نے شنگھائی تعاون تنظیم کے سربراہ اجلاس کے کامیاب اہتمام پر اسلام کریموف کو مبارکباد دی ۔
ازبکستان کے صدر نے اس موقع پر کہا کہ خطے کے ممالک باہمی تعاون سے انتہا پسندی ، دہشتگردی اور منشیات کے مسائل پر قابو پاسکتے ہیں۔
انہوں نے معیشت ، تجارت اور دفاع سمیت مختلف شعبوں میں پاکستان سے تعاون کی خواہش ظاہر کی ۔
انہوں نے کہا کہ شنگھائی تعاون تنظیم میں پاکستان کی مکمل رکنیت علاقائی امن، استحکام اور خوشحالی کے لئے نیک شگون ہے۔