وزیر خزانہ اسحاق ڈار جنوبی ایشیائی خطے کیلئے عالمی بنک کی نائب صدر سے واشنگٹن میں گفتگو کررہے تھے۔

عالمی بنک علاقائی روابط بہتر بنانے کیلئے پشاور سے کابل شاہراہ کی تعمیر کیلئے وسائل فراہم کرے
24 اپریل 2017 (07:28)
0

وزیرخزانہ اسحاق ڈارنے کہاہے کہ ملک میں پائیداراقتصادی ترقی کیلئے ڈھانچہ جاتی تبدیلیاں متعارف کرانے کیلئے حکومت نے ٹھوس اقدامات کئے ہیں۔

وہ جنوبی ایشیائی خطے کیلئے عالمی بنک کی نائب صدرAnnete Dixon سے واشنگٹن میں گفتگو کررہے تھے۔
وفاقی وزیر نے کہاکہ حکومت نے معاشرے کے غریب طبقے کو مالی سہولیات کی فراہمی کیلئے مائیکروفنانس کمپنی قائم کی ہے۔ انہوں نے کہاکہ2018ء کے اوائل میں لوڈشیڈنگ پرقابو پانے کیلئے حکومت توانائی کے منصوبوں پر کام کررہی ہے۔ انہوں نے کہاکہ تقریباً پچیس ہزارمیگاواٹ کے منصوبے شروع کئے گئے ہیں جن پر مختلف مراحل میں عملدرآمدجاری ہے۔
اسحاق ڈارنے کہاکہ حکومت چین پاکستان اقتصادی راہداری کے تحت نجی شعبے کے منصوبوں پرعملدآمد کو اولین ترجیح دے رہی ہے۔ Dixon نے معیشت کوپائیداراقتصادی ترقی کی راہ پرگامزن کرنے کیلئے پاکستانی حکومت کے اقدامات کوسراہا۔
اجلاس کے دوران اسحاق ڈار نے عالمی بنک کوتجویز پیش کی کہ وہ علاقائی روابط کو بہتر بنانے کیلئے پشاور سے کابل تک شاہراہ کی تعمیر کیلئے مالی وسائل فراہم کرے۔
عالمی بنک نے منصوبے کیلئے مالی وسائل فراہم کرنے پراصولی اتفاق کیاہے۔

 وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے واشنگٹن میں سعودی وزیرخزانہ Muhammad Aljadaan سے بھی ملاقات کی۔
اسحاق ڈار نے سعودی وزیرخزانہ کوویژن2030 اور پاکستان کے جاری منصوبوں کے بارے میں بتایا۔

دریں اثناء انٹرنیشنل فنانس کارپوریشن پاکستان میںنجی شعبے کی سرمایہ کاری کو فروغ دینے کے ایک منصوبے پر کام کررہی ہے۔
یہ بات کارپوریشن کے ایگزیکٹووائس پریذیڈنٹ اورچیف ایگزیکٹوافسر
Philippe Le Hoverou نے وزیرخزانہ اسحاق ڈار سے واشنگٹن میں ایک ملاقات کے موقع پربتائی۔
hilippe Le Hoverou Pنے ڈھانچہ جاتی اصلاحات متعارف کرانے اور آئی ایم ایف پروگرام کی تکمیل پر وزیرخزانہ کومبارکباد دی۔
انہوں نے کہاکہ کارپوریشن کے پاس پاکستان میں اسی کروڑ ڈالر کاپروگرام موجود ہے اور وہ اسے ایک ارب ڈالر تک بڑھانا چاہتی ہے۔
اسحاق ڈارنے پاکستان میں پروگرام کادائرہ کاربڑھانے پرآئی ایف سی کاشکریہ ادا کیا۔ انہوں نے کہاکہ کارپوریشن توانائی کے شعبے میں نجی سرمایہ کاری کو فروغ دے کر پاکستان کے توانائی منصوبوں میں مدد کرسکتی ہے۔