Thursday, 02 April 2020, 10:53:52 am

مزید خبریں

 
صدر ٹرمپ بھارت سے مقبوضہ کشمیر میں مسلسل فوجی محاصرے کا معاملہ اٹھائیں، کشمیری رہنما،
February 24, 2020

مقبوضہ کشمیرمیں بھارتی حکومت اپنے غیر قانونی تسلط کے خلاف جاری جدوجہد آزادی کو کمزور کرنے کیلئے خواتین کے خلاف مظالم کو ایک پالیسی کے طورپر جاری رکھے ہوئے ہے ۔

کشمیر میڈیا سروس کے ریسرچ سیکشن کی طرف سے جاری ایک رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ بھارتی فوجیوں نے جنوری 2001سے اب تک کم از کم 6سو 71خواتین کو شہید کیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق جنوری 1989ء سے اب تک بھارتی فوجیوںکی طرف سے جاری ریاستی دہشت گردی کے دوران 22ہزار 9سو 11 خواتین بیوہ ہوئیں۔

رپورٹ میں کہاگیا ہے کہ بھارتی فوجیوں نے اب تک ہزاروں کشمیری خواتین کے بیٹوں، شوہروں اوربھائیوں کو حراست کے دوران لاپتہ اورشہید کیا۔

رپورٹ کے مطابق حریت رہنمائوں آسیہ اندرابی ، فہمیدہ صوفی اور ناہیدہ نسرین سمیت متعدد خواتین مظلوم کشمیری خواتین کی خواہشات کی ترجمانی کرنے پر غیر قانونی طورپر نظربند ہیں۔

تحریک حریت جموں وکشمیر نے سرینگر میں ایک بیان میں امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے اپیل کی کہ وہ اقوام متحدہ کی قراردادوں اور کشمیری عوام کی خواہشات کے مطابق مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے بھارت پر دبائو بڑھائیں۔

بیان میں کہاگیا کہ یہ عالمی برادری کی ذمہ داری ہے کہ وہ کشمیریوں کو بچانے اور مقبوضہ کشمیرمیں انسانی حقوق کی پامالیاں بند کرانے کیلئے اپنا کردار ادا کرے ۔

یاسمین راجہ ، محموداحمد ساغر اور عبدالمجید میر سمیت حریت رہنمائوں اور تنظیموں نے اپنے الگ الگ بیانات میں امریکی صدر ٹرمپ پر زوردیا کہ وہ بھارتی قیادت کے ساتھ اپنی ملاقاتوں میں مقبوضہ علاقے میں گزشتہ چھ ماہ سے زائد عرصے سے جاری فوجی محاصرے اور مواصلاتی بندش کا معاملہ اٹھائیں۔

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے دورہ بھارت کے موقع پر اسلام آباد میں ایک احتجاجی مظاہرہ کیاگیا۔

اس موقع پر حریت رہنمائوں نے اپنے خطاب میں صدر ٹرمپ کے جولائی 2019کے بیان کاحوالہ دیا جس میں انہوں نے کہاتھا کہ و ہ مسئلہ کشمیر کو مذاکرات کے ذریعے حل کرانے میں اپنا کردار ادا کرنے کیلئے تیار ہیں۔انہوں نے زوردیا کہ وہ کشمیریوں کی خواہشات کے مطابق مسئلہ کشمیر کے حل کیلئے اپنا اثر و رسوخ استعمال کریں۔