وزیر اطلاعات نے کہا کہ ٹیکسلا میں پتھر کی گھڑی اس بات کی گواہ ہے کہ وقت کی قدر کرنا ہماری روایت ہے۔

قوموں کی ترقی کیلئے لازم ہے کہ تہذیب وتمدن کو ساتھ لیکر چلیں:رشید
23 مارچ 2016 (21:44)
0

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات و قومی ورثہ سینیٹر پرویز رشید نے کہا کہ قوموں کی ترقی کے لیے لازم ہے کہ وہ اپنی تہذیب و تمدن کو ساتھ لیکر چلیں ' وفاقی دارالحکومت سے 25کلو میٹر کی مسافت پر ٹیکسلا میں پتھر کی گھڑی اس بات کی گواہ ہے وقت کی قدر کرنا ہماری روایت ہے'نئی نسل کو اپنی تہذیب کے بارے میں آگاہی کے لیے حکومت کے ساتھ ساتھ تمام سٹیک ہولڈرز اپنا اپنا کردار ادا کررہے ہیں ۔وہ بدھ کی سہ پہر اسلام آباد کلب میں سوسائٹی آف سویلائزیشن کی 16ویں سالگرہ اور نو منتخب عہدیداروں کی تقریب حلف برداری سے خطاب کر رہے تھے ۔وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر پرویز رشید نے کہا کہ پروفیسر احمد حسن دانی ایسے پاکستانی تھے جو ہماری زمین اور تاریخ کو سب سے زیادہ جانتے تھے 'مجھے زندگی میں ایسے مواقع ملے کہ احمد حسن دانی کو سنا بھی اور پڑھا بھی 'ان کی کمی کبھی پوری نہیں ہوسکتی لیکن آج ان کے لگائے ہوئے پودے سوسائٹی آف سویلائزیشن پاکستان کی صورت میں انہی کا ایجنڈا اور مشن لے کر چل رہی ہے ۔انہوں نے کہا کہ تہذیب کاتعلق زمین 'آب و ہوا' تاریخ 'جنگوں 'حملہ آوروں اوردیگر امور سے ہے 'ہمارا خطہ ان تمام تجربوں سے گذرا ہے اور ہم نے ان کے ساتھ زندگی بسر کرنے کا ہنر بھی سیکھا ہے۔انہوں نے کہاکہ جب لوگوں کا تہذیب سے رشتہ کمزور ہوتا ہے تو حقیقت میں زمین کے ساتھ رشتہ کمزور ہوتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ وقت کی اہمیت ہماری تہذیب کے پاس اسوقت تھی جب کسی کو وقت کا پتہ ہی نہیں تھا 'وفاقی دارالحکومت سے 25کلومیٹرکی مسافت پر ٹیکسلا میں تہذیب کی جو نشانیاں آج بھی محفوظ ہیں ان میں پتھر کی بنی ہوئی گھڑی بھی ہے جو دن کے آغاز پر سورج کے طلوع سے سورج غروب ہونے تک اور رات کا تعین کرتی تھی ۔انہوں نے کہا کہ جب بھی کسی قوم نے اپنی تہذیب کے ساتھ ناتا توڑا ہے تو وہ قوم ترقی کے ٹریک سے اتر جاتی ہے ۔دریں اثناء وفاقی وزیر اطلاعا ت و نشریات سینیٹر پرویز رشید نے سوسائٹی آف سویلائزیشن کے برائے سال 2016-18کے لیے بلامقابلہ منتخب ہونے والے عہدیداروں سے حلف بھی لیا ۔