جسٹس آصف سعید کھوسہ نے اپنے ریمارکس میں کہا ہے کہ یہ معمولی مقدمہ نہیں، عدالت مقدمے کے تمام پہلوؤں پر غور کرے گی اور قانون اور آئین کے مطابق فیصلہ دے گی۔

File photo

سپریم کورٹ نے پانامہ پیپرز کے مقدمے کا فیصلہ محفوظ کر لیا
23 فروری 2017 (10:35)
0

سپریم کورٹ نے پانامہ پیپرز کے مقدمے کا فیصلہ محفوظ کر لیا ہے۔جسٹس آصف سعید کھوسہ کی سربراہی میں پانچ رکنی بنچ نے مقدمے کی سماعت کی۔

اپنے اختتامی ریمارکس میں جسٹس آصف سعید کھوسہ نے کہا کہ کوئی مختصر فیصلہ نہیں جاری کیا جا رہا۔ انہوں نے کہا کہ یہ معمولی مقدمہ نہیں۔ عدالت مقدمے کے تمام پہلوؤں پر غور کرے گی اور قانون اور آئین کے مطابق فیصلہ دے گی۔
سماعت کے دوران عدالت عظمیٰ نے پیش کی گئی دستاویزات اور مواد پر بارہا سوالات اٹھاتے ہوئے کہا کہ اس کی تصدیق کی ضرورت ہے۔جواب الجواب کے عمل کے دوران پاکستان تحریک انصاف کے وکیل نعیم بخاری کی طرف سے اٹھائے گئے نکات کو جواب دیتے ہوئے بنچ نے کہا کہ ملک کے قوانین اور ان کی تشریح کو نظرانداز نہیں کیا جا سکتا۔
چیف جسٹس انور ظہیر جمالی کی ریٹائرمنٹ کے بعد نیا پانچ رکنی بنچ تشکیل دیا گیا تھا جس نے چار جنوری سے مقدمے کی سماعت شروع کی تھی۔