وزیر خزانہ نے کہا کہ رواں مالی سال کیلئے3 ہزار ایک سو ارب روپے ٹیکس محصولات کا ہدف مقرر کیاگیا ہے۔

 تین سال میں ٹیکس وصولوں میں 56فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا:ڈار
23 اپریل 2016 (15:59)
0

وزیر خزانہ اسحق ڈار نے کہا ہے کہ مختلف شعبوں میں اصلاحات کی بدولت ملکی معیشت مثبت سمت میں گامزن ہو گئی ہے۔
اسلام آباد میں قبل ازبجٹ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پچھلے تین سال کے دوران ٹیکس وصولی میں چھپن فیصد اضافہ ہوا ہے۔
وزیر خزانہ نے کہا کہ ٹیکس کا دائرہ کار بڑھایا گیا ہے اور رواں مالی سال کے لئے ٹیکس محصولات کا ہدف تین ہزار ایک سو ارب روپے مقرر کیا گیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ پچھلے چند برسوں کے دوران ترسیلات زر میں سترہ فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے جو اس سال انیس ارب ڈالر ہو جائیں گے۔
اسحق ڈار نے کہا کہ دو ہزار تیرہ میں ملکی زرمبادلہ کے ذخائر دو ارب اسی کروڑ ڈالر تھے جو بڑھ کر اب پندرہ ارب اسی کروڑ ڈالر ہو چکے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ برآمدات میں اضافے کیلئے بھی اقدامات کئے گئے ہیں جبکہ اس شعبے کی بہتری کیلئے حال ہی میں تجارتی پالیسی کا اعلان کیا گیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ گزشتہ سال افراط زر کی شرح ساڑھے چار فیصد تھی جو اس سال چار فیصد سے کم رہی۔
وزیر خزانہ نے یقین ظاہر کیا کہ گردشی قرضے جولائی تک ختم ہو جائیں گے۔
وزیر خزانہ نے کہا کہ حکومت کے اچھے نظم ونسق اور شفافیت کا بین الاقوامی اداروں نے بھی اعتراف کیا ہے۔
انہوںنے کہاکہ اقتصادی استحکام کے باعث چین نے ہمیں چھیالیس ارب ڈالر کا پیکیج دیا ہے۔
انہوںنے کہا کہ پاکستان دنیا کا صف اول کا ملکبننے کی بھرپور صلاحیت کا حامل ہے اوراٹلی، قطر اور سعودی عرب سمیت دوسرے کئی ملک پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے میں دلچسپی رکھتے ہیں۔
اسحق ڈار نے کہا کہ حکومت اپنی باقی مدت کے دوران شرح نمو کو بڑھانے پر توجہ دے گی۔
انہوں نے کہاکہ رواں مالی سال کے پہلے آٹھ ماہ میں مینو فیکچرنگ کے شعبے میں نمایاں بہتری آئی اور اسی طرح نے شرح نمو بڑھانے میں بھرپور کردارادا کیاہے۔
پانامہ لیکس کے حوالے سے اسحق ڈار نے کہا کہ وزیراعظم نے اپنے اہل خانہ کو احتساب کیلئے پیش کر دیا ہے اور اس بارے میں تحقیقاتی کمیشن قائم کرنے کیلئے چیف جسٹس کو خط بھی لکھ دیا گیا ہے۔