Monday, 10 December 2018, 10:43:49 pm
چین نے اپنے فوجی ادارے پر پابندیوں کے ردعمل میں امریکہ سے فوجی مذاکرات ملتوی کر دیے
September 23, 2018

چین نے بیجنگ میں تعینات امریکی سفیر Terrt Branstad کو طلب کیا اور روس سے لڑاکا طیارے اور زمین سے فضا میں مار کرنے والا میزائل نظام خریدنے پر چینی فوجی ادارے پر پابندی کے امریکی فیصلے کے خلاف احتجاج کے طور پر مشترکہ عسکری مذاکرات ملتوی کر دیئے۔

چین کی وزارت دفاع نے ایک بیان میں کہا ہے کہ وہ اپنے بحری فوج کے سربراہ SHEN JINLONG کو امریکہ کے دورے سے واپس بلائیں گے اور آئندہ ہفتے بیجنگ میں ہونے والے مذاکرات ملتوی کیے جائیں گے۔

وزارت دفاع کے ترجمان WU QIAN نے کہا کہ روس کے ساتھ عسکری تعاون میں امریکہ کو مداخلت کا کوئی حق نہیں ہے۔انہوں نے کہاکہ چین کی فوج مزید جوابی اقدامات کا حق محفوظ رکھتی ہے انہوں نے اس طرح کی نام نہاد پابندیاں ختم کرنے کا مطالبہ کیا۔

اس سے پہلے جمعرات کو امریکی محکمہ خارجہ نے روس کے اسلحے کے برآمدی ادارے روسوبورون ایکسپورٹ سے عسکری سازو سامان خریدنے پر چین کے فوجی ادارے پر پابندیاں عائدکیں۔

ادھر روس نے امریکی پابندیوں کو مسترد کرتے ہوئے انہیں روسی اسلحے کی برآمد میں مسابقت کو نقصان پہنچانے کے مترادف قرار دیا۔