file photo

بھارت کے غیر قانونی تسلط کیخلاف احتجاجی مظاہرے
22 مئی 2017 (19:30)
0

مقبوضہ کشمیرکشمیری طلباء نے جموںوکشمیر پر بھارت کے غیر قانونی تسلط کے خلاف احتجاج کیلئے سرینگر ، بارہمولہ اور دیگر علاقوں میں مظاہرے جاری رکھے۔
کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق گاندھی میموریل کالج اور ایم پی ایم ایل ہائیر سکینڈری سکول کے طلباء نے سرینگر کی مرکزی سڑک پر جمع ہوکر احتجاج ریکارڈ کرایا۔ پولیس نے احتجاج کرنے والے طلباء پر آنسو گیس کا استعمال کیا جس کے بعد جھڑپیں شروع ہوگئیں۔
کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سید علی گیلانی نے بھارتی وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کے بیان پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے کہاکہ اگر بھارت سمجھتا ہے کہ جموںوکشمیر اسکی ملکیت ہے تو اسے کشمیری عوام کا فیصلہ معلوم کرنے کیلئے میں رائے شماری کرانی چاہیے۔
میر واعظ کی قیادت میں قائم حریت فورم نے ایک بیان میںکٹھ پتلی حکام کی طرف سے پر امن پروگراموں کے انعقاد پر پابندیوں کی شدید مذمت کی ہے۔
اوسلو میں ناروے کی پارلیمنٹ میں ایک قرارداد پیش کی گئی جس میں عالمی برادری پر زور دیا گیا کہ وہ جنوبی ایشیائی خطے میں ممکنہ ایٹمی جنگ کو روکنے کے لیے تنازعہ کشمیر کے حل کرنے میں سرگرم کردار اد اکرے۔ قراردادکشمیر کے بارے میں پارلیمانی گروپ کے چیئرمین اور کرسچین ڈیموکریٹک پارٹی کے پارلیمانی رہنما Knut Ariled Hareideنے پیش کی۔