نفیس ذکریا نے کہا کہ چینی وزیر خارجہ اسلام آباد کے دورے کے موقع پر فریقین دوطرفہ تعلقات کا جائزہ بھی لیں گے۔

افغان سرحد پر موثر انتظام انتہائی ضروری ہے، دفتر خارجہ
22 جون 2017 (16:15)
0

چین کے وزیر خارجہ وانگ ژی افغانستان میں امن واستحکام سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کے لئے اس ہفتے کے اختتام پر اسلام آباد آ رہے ہیں۔یہ بات دفتر خارجہ کے ترجمان نفیس ذکریا نے آج اسلام آباد میں ہفتہ وار نیوز بریفنگ کے دوران بتائی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان ، چین اور بعض دوسرے ملک افغانستان میں امن اور مفاہمت کے لئے مل کر کام کر رہے ہیں۔

نفیس ذکریا نے کہا کہ چینی وزیر خارجہ کے دورے کے موقع پر فریقین دوطرفہ تعلقات کا جائزہ بھی لیں گے۔افغانستان کی طرف سے سرحد پر باڑ لگانے کی مخالفت سے متعلق ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ دہشت گردوں کی سرحد پار سے دراندازی روکنے کیلئے موثر سرحدی نظام ناگزیر ہے ۔
ایک سوال پر کہ امریکہ پاکستان سے متعلق اپنی پالیسی کا جائزہ لے رہا ہے ، ترجمان نے کہا کہ پاکستان امریکہ کے ساتھ اپنے تعلقات کو انتہائی اہمیت دیتا ہے جو دیرینہ ہیں۔
انہوں نے کہا کہ ہم سمجھتے ہیں کہ دونوں ملکوں کے درمیان جاری تعاون خطے اور پوری دنیا میں امن وسلامتی کے فروغ کے لئے ناگزیر ہے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کسی تفریق کے بغیر دہشتگردوں کے خلاف کارروائی کر رہا ہے ۔

نفیس ذکریا نے کہا کہ امریکہ کے ڈرون حملوں کے بارے میں پاکستان کا موقف انتہائی واضح ہے ۔ یہ حملے بے سود ہیں اور پاکستان کی خودمختاری کی خلاف ورزی کے مترادف ہیں۔

مقبوضہ کشمیر کی تازہ ترین صورتحال کے بارے میں انہوں نے کہا کہ پاکستان نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل ، سلامتی کونسل اور اسلامی تعاون تنظیم کو خطوط لکھے ہیں تاکہ انہیں مقبوضہ وادی میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں کے بارے میں آگاہ کیا جا سکے۔انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ کی یہ ذمہ داری ہے کہ وہ اس دیرینہ تنازعے کو حل کرے جو طویل عرصے سے اس کے ایجنڈے پر ہے ۔