Monday, 22 April 2019, 11:23:18 am
ملائیشین کمپنی کراچی میں کار سازی کا پلانٹ لگائے گی،آئندہ سال جون سے پیداوار شروع ہوگی
March 22, 2019

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان اورملائیشیا نے ایک وزارتی سطح کی مستقل کمیٹی قائم کی ہے جس کے دونوں ملکوں کے درمیان تجارت میں اضافہ کیلئے باقاعدگی سے اجلاس ہوںگے۔انہوں نے آج اسلام آباد میں صنعتوں کے چیف ایگزیکٹو آفیسر کے گول میز اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ڈاکٹر مہاتیر محمد کی وژن اور قیادت میں ملائیشیا نے خود انحصاری اور خوشحالی کی منزل حاصل کی ہے جو بہت سے اسلامی ملکوں کیلئے قابل تقلید ہے ۔عمران خان نے کہاکہ ان کے دورے سے ہمیں ملائیشین ماڈل سے سیکھنے میں مدد ملے گی جس سے دو طرفہ تجارت اور دونوں ملکوں کے درمیان تعاون میں اضافہ ہوگا ۔وزیراعظم نے کہاکہ پاکستان میں ڈاکٹر مہاتیر محمد کا بے پناہ احترام کیاجاتا ہے اور یہ ہمارے لیے بڑے اعزاز کی بات ہے کہ وہ یوم پاکستان کی تقریب میں شرکت کررہے ہیں ۔ملائیشیا کے وزیراعظم مہاتیر محمد نے اپنے خطاب میں کہاکہ اس کانفرنس سے پاکستانی اور ملائیشیا کے تاجروں اور سرمایہ کاروں کو ایک دوسرے کوسمجھنے میں اور اپنے کاروبار کو فروغ دینے کا موقع ملے گا۔ڈاکٹر مہاتیر محمد نے ملائیشیا کی آزادی کے بعد غربت سے صنعتی ترقی تک کے سفر کی تاریخ بیان کی ۔انہوں نے کہاکہ ملائیشیا میں صنعتی ترقی، غیرملکی سرمایہ کاری اور تعلیم کے فروغ اور عوام کو آگاہی دینے سے حاصل ہوئی ہے ۔ملائیشیا کے وزیراعظم نے کہاکہ ان کا ملک پاکستان سے مصنوعات خرید سکتا ہے اور پاکستان کو مصنوعات برآمد بھی کرسکتا ہے ۔انہوں نے کہاکہ ان کا ملک پاکستان میں پروٹان کاروں کی تیاری کا کارخانہ لگانے کا ارادہ رکھتا ہے جو اگلے سال جون میں کام شروع کردے گا ، انہوں نے اس موقع پر وزیراعظم عمران خان کو پروٹان کار کا ایک تحفہ بھی پیش کیا ۔انہوں نے کہاکہ ملائیشیا ایک تجارتی ملک ہے اور اس کی اسرائیل کے سوا کسی کے ساتھ کوئی دشمنی نہیں کیونکہ اس نے فلسطینیوں کی زمین پرقبضہ کررکھا ہے اور انھیں وہاں سے نکال دیا ہے ۔اس موقع پر پاکستانی اور ملائیشیا کی کمپنیوں نے آئی ٹی ، ٹیلی کمیونیکشن ، کاروں کی تیاری اور حلال خوراک کی تیاری کے شعبوں میں مشترکہ منصوبوں کے حوالے سے مفاہمت کی یادداشتوں پر دستخط بھی کیے۔اس موقع پر پاکستانی اور ملائیشیا کی کمپنیوں نے آئی ٹی ، ٹیلی کمیونیکشن اور کاروں کی تیاری کے شعبوں میںمشترکہ منصو بے شروع کرنے کیلئے مفاہمت کی چھ یادداشتوں پر دستخط بھی کیے۔یہ بھی اعلان کیاگیا کہ دونوں ملکوں کے سرمائے کاروں کے درمیان حلال خوراک کی تیاری کے سلسلے میں مفاہمت کی دو مزید یادداشتوں پر جلد ہی دستخط کیے جائیںگے۔