Tuesday, 25 June 2019, 11:08:45 am
ایف اے ٹی ایف کی دہشت گردی کی مالی معاونت کی روک تھام کیلئے پاکستان کے اقدامات کی تحسین
February 22, 2019

File photo

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس نے انسداد منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت کی روک تھام کے حوالے سے قوانین اور نظام میں بہتری کے حوالے سے پاکستان کے اقدامات کو سراہا ہے۔پاکستان کے اقدامات کے بارے میں آج جاری کیے گئے تعریفی بیان میں ایف اے ٹی ایف نے کہا کہ پاکستان کے اقدامات میں کرنسی کے اعلان کے حوالے سے نظام کیلئے ایک مربوط ڈیٹا بیس کو فعال کیا جانا شامل ہے تاہم ایف اے ٹی ایف نے کہا کہ پاکستان کو یہ دکھانے کی ضرورت ہے کہ منی لانڈرنگ اور دہشت گردوں کی مالی معاونت کے معاملات میں پانبدیاں عائد کرنے' رقم کی غیر قانونی منتقلی کا سراغ لگانے والے اداروں کے درمیان بہتر تعاون کا مظاہرہ کرنے اور پراسیکیوٹرز کیلئے حمایت میں اضافے سمیت دیگر اقدامات کی ضرورت ہے۔پیرس میں قائم فنانشل ایکشن ٹاسک فورس نے اس کے قوانین پر عملدرآمد میں مزید بہتری لانے کی غرض سے پاکستان کے لئے دس نکاتی ایجنڈا بھی مقرر کیا ہے۔ادھر وزیر خزانہ اسد عمر نے منی لانڈرنگ خصوصاً دہشت گردی کی مالی معاونت کی روک تھام سے متعلق قوانین اور نظاموں کو مضبوط بنانے کے حوالے سے پاکستان کی کوششوں کو سراہنے پر فنانشل ایکشن فورس بورڈ کا خیر مقدم کیا۔ایک ٹویٹ میں انہوں نے کہاکہ بلیک لسٹ ہونے سے بچنے کیلئے ہماری انتھک کوششوں اور لابنگ کے باوجود ایف اے ٹی ایف نے ہماری موجودہ حیثیت برقرار رکھی۔