وزیر داخلہ نے کہا کہ حکومت قومی احتساب بیورو سے ناراض ہے نہ خوفزدہ۔

 نیب کے اختیارات محدود کرنے کا کوئی ارادہ نہیں:چودھری نثار
21 فروری 2016 (19:14)
0

وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے کہا ہے کہ حکومت کا قومی احتساب بیورو کے اختیارات کو محدود کرنے کا کوئی ارادہ نہیں۔
انہوں نے اتوار کی شام اسلام آباد میں ایک نیوز کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ حکومت نیب سے ناراض یا خوفزدہ نہیں لہٰذا نیب کی طرف سے جاری احتسابی عمل میں کوئی رکاوٹ پیدا نہیں کی جارہی۔
انہوں نے یاد دلایا کہ درحقیقت نیب کا ادارہ فوجی آمر جنرل پرویز مشرف نے مسلم لیگ (ن) کی قیادت کے خلاف قائم کیا تھا۔
انہوں نے کہا کہ جنرل مشرف اور سابق صدر آصف علی زرداری نے تیرہ سال تک نیب کو مسلم لیگ (ن) کے رہنمائوں کے خلاف استعمال کیا تاہم وہ کسی بھی بدعنوانی کا سراغ نہ لگاسکے جب حریف حکومتیں مسلم لیگ (ن) کی قیادت کے خلاف کسی قسم کی بدعنوانی ثابت نہیں کرسکیں تو انہیں اب خوفزدہ نہیں ہونا چاہیے
چوہدری نثار علی خان نے کہا کہ درحقیقت وزیراعظم نے نیب کو سرمایہ کاروں اور تاجروں کو ہراساں نہ کرنے کیلئے کہا ہے جنہوں نے ان سے شکایت کی ہے کہ نیب انہیں ہراساں کررہا ہے۔
تاہم انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کے بیان کو اس کے اصل تناظر میں دیکھا جانا چاہیے۔
وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے پاکستان پیپلز پارٹی کو ان کے دور میں بدعنوانی کے سات یا آٹھ بڑے سیکنڈلز کی ایف آئی اے کے ذریعے ہونے والی تحقیقات کی عدالتی تفتیش کی پیشکش کا اعادہ کیا انہوں نے کہا کہ پیپلز پارٹی کی حکومت دنیا میں واحد حکومت ہے جس نے حج کے پیسوں میں بھی کرپشن کی ہے۔
انہوں نے کہا کہ ای او بی آئی ' پی ایس او ' متروکہ وقف املاک ٹرسٹ ' نیو اسلام آباد ائیرپورٹ' پی آئی اے اور دیگر بڑے سیکنڈل پیپلز پارٹی کے سابق دور حکومت میں سامنے آئے۔
وفاقی وزیر نے کہا کہ ایف آئی اے نے کسی حکومتی یا ریاستی دبائو کے بغیر ان سیکنڈلز کی آزادانہ تحقیقات کیں' مسلم لیگ (ن) کی حکومت تحریک انصاف اور جماعت اسلامی سمیت حزب اختلاف کی تمام جماعتوں کو ان سیکنڈلز پر بریفنگ دینے کو تیار ہے۔
چوہدری نثار نے کہا کہ پیپلز پارٹی ایف آئی اے پر جانبداری کا الزام لگاکر صرف ڈاکٹر عاصم حسین کو بچانے کی کوشش کر رہی ہے۔
انہوں نے کہا کہ ایف آئی اے نے لوٹے گئے ساڑھے چودہ ارب روپے برآمد کرلیے ہیں انہوں نے ایف آئی اے کے عہدیداروں کی تنخواہوں اور دیگر مراعات میں اضافے کی سفارش کی۔
چوہدری نثار علی خان نے کہا کہ پٹھانکوٹ واقعے میں بھارت کی فراہم کردہ معلومات کی بنیاد پر ایف آئی آر درج کی گئی ہے۔
انہوں نے کہا کہ پٹھانکوٹ واقعے کے حوالے سے بھارت نے چند ٹیلی فون نمبر فراہم کیے ہیں۔
وفاقی وزیر نے کہا کہ حکومت نے خصوصی تحقیقاتی ٹیم کے دورے کے بارے میں بھارت کو خط لکھ دیا ہے انہوں نے کہا کہ نئی پاسپورٹ پالیسی کا اعلان جلد کر دیا جائے گا۔