وزیر خزانہ نے کہا کہ پاکستان 30لاکھ کے لگ بھگ افغان مہاجرین کی میزبانی کر رہا ہے۔

خطے میں امن و سلامتی کیلئے اچھی ہمسائیگی کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں،ڈار
21 اپریل 2017 (22:30)
0

وزیر خزانہ اسحق ڈار نے کہا ہے کہ پاکستان کی معیشت شاندار اقتصادی بحالی کی راہ پر گامزن ہے اور اس کا شمار خطے کی تیزی سے ترقی کرنے والی معیشتوں میں ہورہا ہے جہاں سرمایہ کاری کے بے شمار مواقع موجود ہیں۔
وہ واشنگٹن میں Heritage فائونڈیشن میں پاکستان کی اقتصادی اصلاحات، سرمایہ کاری کے لئے پرکشش مراعات اورترقی اورسماجی تبدیلی کے امکانات کے موضوع پر کلیدی خطاب کررہے تھے۔
وفاقی وزیر نے کہاکہ حکومت توانائی، معیشت، انتہا پسندی کے خاتمے اور تعلیم کے فروغ پر مبنی چار نکاتی حکمت عملی پر کامیابی سے عمل پیرا ہے۔ اسی طرح حکومت نے معاشی شعبے میں متعدد بنیادی اصلاحات متعارف کرائی ہیں جن میں زراعانت میں کمی، ٹیکس کے دائرہ کار میں توسیع، زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافے اور افراط زر کی شرح میں کمی سے متعلق اقدامات شامل ہیں۔
انہوں نے کہاکہ گزشتہ تین برسوں میں ٹیکس کی وصولیوں میں ساٹھ فیصد سے زائد اضافہ ہو ہے جو ماضی کے مقابلے میں کہیں زیادہ ہے۔
چین پاکستان اقتصادی راہداری پر تبصرہ کرتے ہوئے انہوںنے کہاکہ سی پیک ایک عظیم انقلابی منصوبہ ہے جس سے نہ صر ف پاکستان بلکہ پورے خطے کی تقدیر بدل جائے گی کیونکہ اس میں سرمایہ کاروں کے لئے سرمایہ کاری کے وسیع تر مواقع موجود ہیں۔
وفاقی وزیر نے کہاکہ پاکستان اور امریکہ دیرینہ دوست، شراکت دار اورتذویراتی اتحادی ملک ہیں اور ان کے درمیان مختلف شعبوں میں طویل مدت دوطرفہ شراکت داری موجود ہے۔
انہوں نے کہاکہ پاکستان دوطرفہ تعلقات کے استحکام اور فروغ کے لئے نئی امریکی انتظامیہ کے ساتھ مل کر کام کرنے کا خواہاں ہے۔

دریں اثناء وزیر خزانہ اسحق ڈار نے واشنگٹن میں اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے صدر سے بھی ملاقات کی اور2030 کے ترقیاتی اہداف پر تبادلہ خیال کیا۔
جنرل اسمبلی کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل بھی ملاقات میں موجود تھے۔