Wednesday, 12 August 2020, 11:34:46 am
سلامتی کونسل میں بھارت کا انتخاب انصاف اور عالمی قوانین کے ساتھ مذاق ہے،صدر
June 21, 2020

آزاد جموں وکشمیر کے صدر سردار مسعود خان نے کہا ہے کہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں بھارت کا انتخاب انصاف اور عالمی قوانین کے ساتھ مذاق ہے۔

آج ایک غیر ملکی ٹی وی نیٹ ورک کو انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ یہ بات دنیا کے پیش نظر رہنی چاہیے کہ آئندہ سال کے آغاز میں جب بھارتیہ جنتا پارٹی اور راشٹریہ سوائم سیوک کی فسطائی حکومت کا وفد کونسل میں بیٹھا ہوگا تو بھارتی قابض افواج کے ہاتھ کشمیریوں کے خون سے رنگے ہونگے۔
صدر نے کہا کہ بھارت بین الاقوامی امن وسلامتی کے قیام کیلئے سلامتی کونسل کے منشور پر عملدرآمد کی اہلیت نہیں رکھتا۔
انہوں نے کہا کہ ایک ایسے وقت میں جب اقوام متحدہ اپنی اہمیت کھو رہی ہے بھارت کے سلامتی کونسل میں آنے سے عالمی نظام میں مزید بگاڑ آئیگا۔
دنیا آہستہ آہستہ بدامنی کی جانب بڑھ رہی ہے کیونکہ انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیاں کرنے والے اور امن وسلامتی کو تباہ کرنے والے ملک کو سلامتی کونسل جیسے قابل احترام کثیر ملکی فورم میں نشست دی جارہی ہے۔
سردار مسعود خان نے کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی اور راشٹریہ سوائم سیوک سنگ کی حکومت ایک نوآبادیاتی قوت ہے جو پوری دنیا کے سامنے کشمیریوں کے خلاف وحشیانہ طاقت استعمال کررہی ہے انہیں قتل کررہی ہے، بینائی سے محروم کررہی ہے اور خواتین کی بے حرمتی کررہی ہے۔