مریم اورنگزیب نے ایوان کو بتایا کہ گزشتہ مالی سال کے دوران وزارت اطلاعات کیلئے سرکاری شعبے کے ترقیاتی پروگرام کے بتیس منصوبوں کیلئے انتالیس کروڑ نو لاکھ دس ہزار روپے مختص کئے گئے۔

سینیٹ : خیبرپختونخوا میں غیرسرکاری تنظیموں ،افراد پر پابندی کا تاثر مسترد
20 دسمبر 2016 (18:05)
0

سینیٹ کو آج بتایاگیا کہ ایف آئی اے قطعی قانونی اختیارات مکمل آزادی سے کام کررہا ہے۔
داخلہ امور کے وزیر مملکت بلیغ الرحمن نے ایک سوال کے جواب میں ایوان کو بتایا کہ ادارہ وزارت داخلہ کی مداخلت اور اثرورسوخ کے بغیر انتظامی اور عملی اختیارات استعمال کررہا ہے۔
انہوں نے کہا کہ مردان میں ایف آئی اے کا نیا پولیس سٹیشن جبکہ گوجرانوالہ میں ایک خصوصی عدالت قائم کی گئی ہے۔ وزیر مملکت نے کہا کہ انسانی سمگلروں کے خلاف خصوصی مہم شروع کی گئی ہے جس میں دوہزار سے زائد افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔
وزیرریلوے خواجہ سعد رفیق نے ایوان کو بتایا کہ حکومت کی پالیسیوں کی بدولت پاکستان ریلوے کی مالی حالت میں نمایاں بہتر آئی ہے۔
انہوں نے کہا کہ ریلوے کو دوہزار تیرہ چودہ میں 22 ارب 80 کروڑ روپے کی آمدنی ہوئی جبکہ اس کے مقابلے میں دوہزار پندرہ سولہ میں اس کی آمدنی چھتیس ارب ساٹھ کروڑ روپے رہی۔
انہوں نے کہا کہ دوہزار پندرہ سولہ میں ریلوے کا خسارہ کم ہوکر چوبیس ارب روپے ہوگیا جو کہ دوہزار تیرہ چودہ میں بتیس ارب باون کروڑ ستر لاکھ روپے تھا۔
وزیر نے کہا کہ مستقبل میں مال بردار ٹریفک کیلئے نئے مواقع تلاش کرنے کی غرض سے مال بردار ٹرانسپورٹ کمپنی قائم کی گئی ہے۔
اطلاعات ونشریات کی وزیر مملکت مریم اورنگزیب نے ایوان کو بتایا کہ گزشتہ مالی سال کے دوران وزارت اطلاعات کیلئے سرکاری شعبے کے ترقیاتی پروگرام کے بتیس منصوبوں کیلئے انتالیس کروڑ نو لاکھ دس ہزار روپے مختص کئے گئے۔
انہوں نے کہا کہ سرکاری شعبے کے ترقیاتی پروگرام کے زیادہ تر منصوبے بلوچستان میں ہیں۔
امور داخلہ کے وزیر مملکت بلیغ الرحمن نے بتایا کہ دوبارہ تصدیق کے پروگرام کے دوران اب تک ستاون ہزار آٹھ سو انتالیس جعلی شناختی کارڈ پکڑے گئے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ نادرا کے ستاون ملازمین ایسے کیسز میں ملوث پائے گئے ہیں جن میں سے سولہ کو برطرف کیا جاچکا ہے۔
چیئرمین نے آٹھ اگست 2016 کو سول ہسپتال کوئٹہ میں دہشتگردی کے واقعے کے بارے میں کمیشن کی رپورٹ کے حوالے سے شیری رحمن اور دیگر ارکان کی جانب سے پیش کی گئی تحریک التواء کو بحث کیلئے منظور کرلیا۔
داخلہ امور کے وزیر مملکت بلیغ الرحمن نے پورے خیبرپختونخوا میں غیر سرکاری تنظیموں اور افراد پر پابندی کے تاثر کو مسترد کردیا ہے۔
انہوں نے اعظم خان سواتی کے ایک توجہ دلائو نوٹس کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ Secretایکٹ مجریہ1923 اور فارنرز ایکٹ مجریہ 1951 کے تحت سیکورٹی وجوہات کی بنیاد پر کسی بھی علاقے کو ممنوعہ علاقہ قرار دیا جاسکتا ہے۔
انہوں نے کہا کہ فی الحال بلوچستان ، فاٹا اور خیبرپختونخوا کے کچھ علاقوں کو غیر ملکیوں کیلئے ممنوعہ قرار دیا گیا ہے۔
وزیر مملکت نے اس پروپیگنڈے کو مسترد کردیا کہ خیبرپختونخوا کے ساتھ امیتازی سلوک کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جو غیر ملکی ممنوعہ علاقوں کا دورہ کرنا چاہتے ہیں ان کیلئے این او سی کا حصول لازمی ہے جو کہ عام طور پر وزارت داخلہ جاری کرتی ہے جبکہ بعض صورتوں میں ٹھوس بنیادوں پر اجازت نامہ منسوخ کردیا جاتا ہے۔
ایوان نے آج لیگل پریکٹیشنرزاینڈ بار کونسلز ترمیمی بل مجریہ2016 منظور کیا۔
یہ بل وزیر قانون زاہد حامد نے پیش کیا جس کا مقصد صوبائی حکومتوں کو مختلف بارکونسلز کی مالی امداد کے قابل بنانا ہے۔
چیئرمین نے وزیر قانون زاہد حامد کی طرف سے پیش کیا گیا پاکستان کمیشنز آف انکوائری بل مجریہ2016ء متعلقہ کمیٹی کو بھجوا دیا۔
ایوان کا اجلاس اب کل سہ پہر ڈھائی بجے ہوگا۔