وزیرپیٹرولیم نے قومی اسمبلی کو بتایا کہ اس پائپ لائن کی تعمیر سے اس کے روٹ کے ساتھ پسماندہ علاقوں میں روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔

ترکمانستان ، افغانستان ، پاکستان ، بھارت گیس پائپ لائن منصوبہ 2020 میں مکمل ہو گا
20 اپریل 2017 (15:05)
0

قومی اسمبلی کو آج بتایا گیا ہے کہ ترکمانستان ، افغانستان ، پاکستان ، بھارت گیس پائپ لائن منصوبے پر کام شروع ہو چکا ہے جو 2020 میں مکمل ہو گا ۔وقفہ سوالات کے دوران پٹرولیم اور قدرتی وسیلوں کے وفاقی وزیر شاہد خاقان عباسی نے بتایا کہ اس پائپ لائن کی تعمیر سے اس کے روٹ کے ساتھ پسماندہ علاقوں میں روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے۔
ایک سوال پر انہوں نے کہا کہ تمام نئے گیس کنکشن کمپیوٹر کے ذریعے تیار کردہ فہرستوں کے مطابق فراہم کئے جائیں گے۔ایک اور سوال پر وفاقی وزیر نے صوبہ سندھ  کو گیس کی فراہمی کے لئے سندھ کے خلاف کسی بھی قسم کے امتیاز کو مسترد کر دیا۔ انہوں نے کہا کہ سندھ پاکستان پیپلز پارٹی کے دور حکومت کے مقابلے میں زیادہ گیس حاصل کر رہا ہے۔

ایک نکتہ اعتراض پر قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے حکومت پر زور دیا کہ وہ پارلیمنٹ کی بالادستی مقدم رکھے۔انہوں نے کہا کہ یہ پارلیمنٹ ہی تھی جس نے ضرورت کے وقت وزیراعظم نواز شریف کا ساتھ دیا۔

بعد میں پاکستان پیپلز پارٹی کے ارکان نے ایوان کی کارروائی کا بائیکاٹ کیا۔

ایک سوال پر پارلیمانی امور کے وفاقی وزیر شیخ آفتاب احمد نے ایوان کو بتایا کہ عدالتوں کو چوبیس گھنٹے کھلا رکھنے سے متعلق کوئی تجویز زیر غور نہیں ہے۔
تاہم وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے لئے ایوننگ کورٹس بل 2012 کے بل کا مسودہ زیر غور ہے تاکہ عدالتوں میں زیر التواء مقدمات کے بوجھ کو کم کیا جا سکے۔