پارلیمانی سیکرٹری ثقلین بخاری نے کہا کہ اقتصادی راہداری کسی ایک سڑک کا نام نہیں ہے بلکہ چاروں صوبوں کوملانے کیلئے سڑکوں کا ایک جال بچھایا جائے گا۔

اقتصادی راہداری منصوبے میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی، قومی اسمبلی کو یقین دہانی
20 اپریل 2015 (19:12)
0

قومی اسمبلی کو پیر کے روز بتایا گیا کہ پاک چین اقتصادی راہداری کے اصل منصوبے میں کوئی تبدیلی نہیں کی گئی۔
منصوبہ بندی اور ترقی کے پارلیمانی سیکرٹری ثقلین بخاری نے وقفہ سوالات کے دوران ایوان کو بتایا کہ اس راہداری کے ذریعے ملک کے تمام حصوں کو منسلک کر دیا جائے گا۔
انہوں نے کہا کہ اقتصادی راہداری کسی ایک سڑک کا نام نہیں ہے بلکہ چاروں صوبوں کوملانے کیلئے سڑکوں کا ایک جال بچھایا جائے گا۔
انہوں نے کہا کہ شاہراہ قراقرم کی بحالی کا کام جاری ہے اور رائے کوٹ سے اسلام آباد تک اس سڑک کا 437 کلومیٹر طویل حصہ تعمیر کیا جائے گا جو راہداری منصوبے کا حصہ ہے۔
انہوں نے کہا کہ پاک چین اقتصادی راہداری تعاون کے اقدامات اور منصوبوں کا ایک جامع پیکیج ہے جس میں مواصلات \' انفارمیشن \' نیٹ ورک کی سہولتیں \' توانائی \'صنعتوں اور انڈسٹریل پارکس میں تعاون کے علاوہ زرعی ترقی \' غربت کے خاتمے اور سیاحت کے منصوبے شامل ہیں۔