قانون سے ہندو برادری کو شادی اور خاندانی حقوق کا تحفظ ملے گا۔

File Photo

ہندو شادی ایکٹ نافذ،صدرنے دستخط کر دئیے
19 مارچ 2017 (18:24)
0

صدر ممنون حسین نے ہندوئوں کی شادی ایکٹ کو نافذ کردیا ہے۔
صدر نے وزیراعظم کی ایڈوائس پر آج اس حوالے سے بل پر دستخط کئے ۔
بل کے نفاذ کے موقع پر وزیراعظم نواز شریف نے ایک بیان میں کہا کہ پاکستان میں رہنے والی اقلیتوں کو یکساں حقوق حاصل ہیں۔
انہوں نے کہا کہ اس قانون سے ہندو برادری کو شادی اور خاندانی حقوق کا تحفظ ملے گا۔
انہوں نے کہا کہ حکومت ہندوئوں کی شادی کے اندراج کیلئے رجسٹرار مقرر کرے گی۔
نواز شریف نے کہا کہ حکومت نے اقلیتوں سمیت پاکستان کے تمام افراد کو ہمیشہ یکساں ترجیح دی ہے۔
انہوں نے کہا کہ تمام اقلیتیں محب وطن ہیں۔

قانون کے تحت ہندوبرادری کے افراد اپنے مروجہ رسم ورواج کے مطابق شادیاں کرسکیں گے۔
قانون میں ازدواجی حقوق کی بحالی سے متعلق طریقہ کار ، منصفانہ طور پر علیحدگی ، اہلیہ اور بچوں کا مالیاتی تحفظ ، شادی کے خاتمے پر متبادل ریلیف اور باہمی رضا مندی سے طلاق شامل ہیں۔
اس قانون کے تحت تمام مقدمات فرسٹ کلاس مجسٹریٹ کی عدالت میں چلائے جاسکیں گے۔