نوازشریف نے کہا کہ پاکستان نے ٹیکس استثنیٰ، ٹیرف میں کمی سمیت پرکشش ترغیبات کی پیشکش کی ہے۔

غیر ملکی سرمایہ کاروں کیلئے پالیسیاں نرم کر رہے ہیں:وزیراعظم
19 جنوری 2017 (20:43)
0

وزیراعظم محمد نوازشریف نے کہا ہے کہ ان کی حکومت سرمایہ کاری کے لئے سازگار ماحول کے قیام کی غرض سے ایک جامع منصوبے پر عمل کررہی ہے اور غیر ملکی سرمایہ کاروں کے لئے اپنی پالیسیاں نرم کر رہی ہے۔انہوں نے یہ بات جمعرات کے روز ڈیووس میں عالمی اقتصادی فورم کے سالانہ اجلاس کے موقع پر ایک گول میز کانفرنس میں اہم کمپنیوں کے سربراہان کے گروپ سے بات چیت کرتے ہوئے کہی۔

وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان نے ٹیکس استثنیٰ ٹیرف میں کمی، بنیادی ڈھانچے اور سرمایہ کاروں کی سہولت کے لئے خدمات کی فراہمی سمیت پرکشش ترغیبات کی پیشکش کی ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان نے خصوصی اقتصادی زونز کے قیام کی پیشکش کی ہے جس کے تحت سرمایہ کاروں کو ٹیکس کی چھوٹ حاصل ہوگی اور وہ پلانٹ اور مشینری کی ڈیوٹی فری درآمد کرسکیں گے، اس لئے ہم آپ کو خاص طور پر خصوصی اقتصادی زونز کے قیام کی دعوت دیتے ہیں۔
محمد نواز شریف نے کہا کہ پاکستان کا اقتصادی منظر نامہ گزشتہ تین سال میں مکمل طور پر تبدیل ہوچکا ہے جس کا عالمی سطح پراعتراف کیا جارہاہے۔کمپنیوں کے چیف ایگزیکٹو افسران نے کہا کہ وہ پاکستان کی معیشت کے مثبت اقدامات کی تعریف کرتے ہیں انہوں نے پاکستان میں سرمایہ کاری میں دلچسپی ظاہرکی۔انہوں نے کہا کہ وہ اپنی تیار مصنوعات کی دوبارہ برآمد کے لئے پاکستان کوبہترین ملک تصورکرتے ہیں۔
انہوں نے امید ظاہر کی کہ پاکستان اپنی ٹھوس اقتصادی پالیسیوں کے باعث سرمایہ کاری کیلئے انتہائی سازگار ملک ہے۔

وزیراعظم سے جن کمپنیوں کے ایگزیکٹوز نے ملاقات کی ان میں جاپان بنک فار انٹرنیشنل کوآپریشن Ingredion Incorporated امریکہ، کوک ہولڈنگ ،ترکی ٹیلی نار گروپ، ناروے Novartis AG، سوئٹزر لینڈ اورسوئس ری مینجمنٹ لمیٹڈ شامل ہیں۔