Tuesday, 20 August 2019, 08:50:51 pm

مزید خبریں

 
دفاعی صنعت کو مضبوط،خودکفیل بنانے کیلئے سرکاری و نجی شراکت داری کی ضرورت ہے،آرمی چیف
July 19, 2019

بری فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے کہا ہے کہ پاکستان کی دفاعی صنعت کو مضبوط خودکفیل اور فعال بنانے کے لئے نجی اور سرکاری شعبے کی شراکت داری بڑھانے کی ضرورت ہے۔

انہوں نے ان خیالات کا اظہار آج راولپنڈی میں دو روزہ قومی سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیاجس کا موضوع تھا۔'' دفاعی پیداوار خود انحصاری کے ذریعے سلامتی''۔آرمی چیف نے کہا کہ سرکاری شعبے اور دفاعی پیداوار کے اداروں کے علاوہ نجی شعبے میں بھی بھرپور دفاعی صلاحیت وقت کی اشد ضرورت ہے۔ملکی دفاع ناقابل تسخیر بنانے کے لئے دفاعی پیداوار میں نجی اور سرکاری شعبے میں مربوط معاونت ہونی چاہئے تاکہ مقامی پیداوار کو بہتر بنایا جا سکے۔دوروزہ سیمینار بحث و مباحثے کے بعد حکومت کوپالیسی سازی کیلئے تجاویز دینے کے ساتھ ختم ہوا۔ان تجاویز میں مقامی دفاعی پیداوار میں سہولت فراہم کرنے کیلئے وزیراعظم کی سربراہی میں ٹاسک فورس کا قیام، خام مال کی صنعت کا قیام اور اس میں سرکاری اور نجی شعبے کی شراکت داری شامل ہیں۔سیمینار میں اضافی دفاعی مصنوعات کی برآمد بھی تجویز کی گئی اور کہا گیا کہ ڈیجیٹل پارکس بھی قائم کئے جائیں تاکہ سافٹ ویئر انڈسٹری کی صلاحیت سے استفادہ کیا جائے اور یونیورسٹیوں میں تحقیق و ترقی کو فروغ دیا جائے۔

سرکاری شعبے کے نمائندوں نے دفاعی پیداوار کے شعبے میں سرکاری اور نجی شراکت داری کیلئے حکمت عملی تجویز کی۔ اس موقع پر دفاع پیداوار کی وزیر زبیدہ جلال اور سائنس و ٹیکنالوجی کے وزیر چوہدری فواد حسین نے پاکستان کی دفاعی صنعت کو منافع بخش بنانے کیلئے اپنی تجاویز دیں۔نجی شعبوں کے نمائندوں نے دفاعی پیداوار کے شعبے میں سرکاری اور نجی شراکت داری بڑھانے کے لئے لائحہ عمل پیش کیا۔تجارت، ٹیکسٹائل اور صنعت و پیداوار کے بارے میں وزیراعظم کے مشیر عبدالرزاق داؤد نے شرکاء کو قومی سلامتی کے لئے خودمختار دفاعی صنعت کی اہمیت سے آگاہ کیا۔بری فوج کے سربراہ جنرل قمر جاوید باجوہ نے قومی سلامتی کے اہم معاملے کے لئے وقت نکالنے پر شرکاء کا شکریہ ادا کیا۔