Wednesday, 27 March 2019, 05:22:26 am
مقبوضہ کشمیر : شہید نوجوانوں کی نماز جنازہ میں ہزاروں افراد کی شرکت
February 19, 2019

فائل فوٹو

مقبوضہ کشمیر میں گزشتہ روز ضلع پلوامہ کے علاقے پنگلنہ میں محاصرے اور تلاشی کی ایک کارروائی کے دوران بھارتی فوجیوں کے ہاتھوں شہید ہونے والے نوجوانوں کی نماز جنازہ میں آج ہزاروں افراد نے شرکت کی ۔

نوجوان ہلال احمد نائیکو اورمشتاق احمد بٹ کو دو ساتھیوں کے ہمراہ بھارتی فوجیوں نے گن شپ ہیلی کاپٹروں کی مدد سے گزشتہ روز ایک کارروائی کے دوران شہید کیا تھا۔بھارتی فوجیوں کی گولہ باری سے ایک درجن سے زائد مکانات تباہ ہوئے تھے۔ شہداء کی میتیں جونہی ان کے آبائی علاقے پنگلنہ لائی گئیں،ہزاروں لوگ ان کے جنازے میں شرکت کے لیے امڈ آئے۔ لوگوں کی بڑی تعداد میں آمد کے سبب شہداء کی نماز جنازہ کئی مرتبہ ادا کی گئی اور انہیں آزادی کے حق میںاور بھارت کے خلاف فلک شگاف نعروں کی گونج میں سپردخاک کیا گیا۔

ادھرنوجوانوں کی شہادت پر آج ضلع پلوامہ اور اس سے ملحقہ علاقوں میں مکمل ہڑتال کی گئی ۔ ضلع میں تمام دکانیں،نجی ادارے اور کاروباری مراکز بند اور سڑکوں پر گاڑیوں کی آمدورفت معطل رہی۔

بھارتی فوجیوں نے ضلع کے علاقے ترال میں آج محاصرے اورتلاشی کی کارروائی شروع کردی۔

ملازمین کی مشترکہ مشاوتی کمیٹی کے زیر اہتمام بڑی تعداد میں ملازمین نے جموں اور بھارت میں کشمیریوںکو ہراساں کئے جانے کے خلاف پریس کالونی سرینگر میں احتجاج کیا۔

وادی کشمیر کے ایک سو سے زائد تاجروں کواپنی دکانیںبند کر کے بھارتی ریاستوں سے چلے جانے پر مجبور کیاگیا ہے۔ بھارت کے مختلف تعلیمی اداروں میں زیر تعلیم تین سو سے زائد کشمیری طلباہندو بلوائیوں کی طرف سے حملوں اور دھمکیوں کے بعد اپنی تعلیم ترک کر کے کشمیر واپس آگئے ہیں۔

ادھرسیدعلی گیلانی ، میر واعظ عمر فاروق اور محمد یاسین ملک پر مشتمل مشترکہ حریت قیادت نے آج سرینگر میں ایک اجلاس کے بعد کہاکہ بھارتی مظالم کشمیری نوجوانوں کو بندوق اٹھانے پر مجبور کررہے ہیں ۔ انہوں نے کہاکہ بھارت فوجی طاقت کے ذریعے جدوجہد آزادی کو دبانے میں کبھی کامیاب نہیں ہوگا۔آزادی پسند رہنمائوں نے اعلان کیا کہ جس روز بھارتی سپریم کورٹ میں مقبوضہ علاقے اور اس کے باشندوں کی خصوصی حیثیت سے متعلق قانون کے خلاف دائر درخواستوں پر سماعت ہوگی مقبوضہ علاقے میں مکمل ہڑتال کی جائیگی۔