جرگہ کے رہنمااور جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق نے یقین ظاہر کیا کہ سیاسی بحران کا باوقار حل تلاش کرلیاجائے گا۔

سیاسی جرگے کی تمام فریقین سے لچک کے مظاہرے کی اپیل
18 ستمبر 2014 (20:25)
0

سیاسی جرگہ کے ارکان نے کہاہے کہ تقریباََ تمام معاملات خوش اسلوبی سے طے پاگئے ہیں تاہم دھاندلی کی تعریف پر اتفاق رائے نہیں ہوسکا۔
وہ جمعرات کو اسلام آباد میں پاکستان تحریک انصاف اور پاکستان عوامی تحریک کی مذاکراتی ٹیموں سے ملاقات کے بعد صحافیوں سے بات کررہے تھے ۔
جرگہ کے رہنمااور جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق نے یقین ظاہر کیا کہ سیاسی بحران کا باوقار حل تلاش کرلیاجائے گا۔
اُنہوں نے کہا کہ جرگہ نے مشاورت سے تجاویز کا مسودہ تیار کر کے حکومت ' تحریک انصاف اور عوامی تحریک کو بھیج دیاہے ۔
اُنہوں نے کہا کہ انہیں مثبت جواب کی اُمید ہے مگر ایسا لگتا ہے کہ تینوں فریق آگے بڑھنے کیلئے ایک دوسرے کی طرف دیکھ رہے ہیں ۔
سراج الحق نے تینوں فریقوں سے اپنے موقف سے ہٹنے کی درخواست کی تاکہ قوم کو موجودہ بحران سے نکالا جاسکے ۔
پاکستان پیپلزپارٹی کے رہنما رحمن ملک نے کہاہے کہ وزیراعظم نے دو ٹوک الفاظ میں کہاہے کہ وہ دھاندلی کے الزامات درست ثابت ہونے پر استعفیٰ دے دیں گے ۔ اُنہوں نے کہا کہ جرگے نے تجویز دی ہے کہ وزیراعظم یہ اعلان پارلیمنٹ میں کریں ۔
رحمن ملک نے کہا کہ جرگے نے تحریک انصاف اور عوامی تحریک سے پوچھا کہ وہ دھرنے ختم کرنے کا اعلان کب کریں گے کیونکہ لوگ ایک ماہ سے زائد عرصہ سے جاری اس مشق سے تنگ آچکے ہیں ۔
جرگہ کے ایک اور رکن میر حاصل بزنجو نے کہا کہ بات چیت کے پھر سے آغاز اور کامیابی کی خاطر سازگار ماحول پیدا کرنے کیلئے تمام فریقوں کو لفظی جنگ بندکردینی چاہیئے ۔