سیکرٹری خاجہ اعزاز چوہدری نے کہاکہ پاکستان کی امن کی خواہش کو اس کی کمزوری نہیں سمجھنا چاہیے

file photo

دہشت گردی میں خاتمے کیلئے افغانستان کا تعاون ناگزیر ہے: اعزاز
18 فروری 2017 (06:38)
0

سیکرٹری خارجہ اعزاز احمد چوہدری نے کہا ہے کہ خطے سے دہشت گردی کے خاتمے اور قیام امن یقینی بنانے کیلئے افغانستان کا تعاون ناگزیر ہے۔انہوں نے ایک انٹرویو میں افغان قیادت، ملٹری انٹیلی جنس اور دوسرے متعلقہ فریقوں پرزوردیا کہ وہ مسائل کے حل کی حکمت عملی وضع کرنے کیلئے آگے آئیں۔
اعزاز چوہدری نے کہا کہ پاکستان خطے میں افغانستان کی جانب سے دہشت گردوں کی دراندازی روکنے کیلئے سرحدی نظم ونسق اورسرحدی علاقوں میں گشت سمیت تمام اہم اقدامات کررہا ہے۔انہوں نے کہا کہ پاکستان کی فوجی اور سول قیادت نے افغانستان کو پیغام دیا ہے کہ وہ پاکستان کے خلاف افغان سرزمین استعمال کرنے والے دہشت گردوں کو موثر طور پر روکنے کیلئے اقدامات کرے۔
اعزازچوہدری نے کہاکہ پاکستان اور خطے کے دوسرے ملکوں کو افغانستان میں داعش کی موجودگی پر شدید تحفظات ہیں جوخطے کیلئے خطرے کا باعث بن سکتی ہے۔انہوں نے کہاکہ امریکہ اس سلسلے میں کردار ادا کرسکتا ہے اور اسے افغانستان سے کہنا چاہیے کہ وہ خطے میں قیام امن یقینی بنانے کیلئے سنجیدہ اقدامات کرے۔
ایک سوال پر انہوں نے کہاکہ پاکستان کی امن کی خواہش کو اس کی کمزوری نہیں سمجھنا چاہیے، انہوں نے کہا کہ ہم اپنے ہمسایوں کے ساتھ تمام مسائل کو خوش اسلوبی سے حل کرنا چاہتے ہیں۔ ایک اور سوال پر اعزاز چوہدری نے کہا کہ پاکستان کی سول اور فوجی قیادت نے ملک سے دہشت گردوں کے خاتمے اور ترقی کیلئے متحد ہوکر کوششیں کی ہیں۔

پاکستان کی خارجہ پالیسی کو درپیش مسائل کے بارے میں گفتگو کرتے ہوئے سیکرٹری خارجہ نے کہاکہ پاکستان کیلئے سب سے بڑا مسئلہ دہشت گردی ہے۔
انہوں نے کہاکہ چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبہ قومی ترقی کیلئے بے شمار مواقع فراہم کررہا ہے۔اعزاز چوہدری نے کہاکہ افغانستان میں بدامنی نے پاکستان کو بری طرح متاثر کیا ہے اوراس سے قومی سلامتی کوکئی خطرات کا سامنا ہے۔
انہوںنے کہاکہ پرامن ہمسائیگی اور اقتصادی تعاون کو مضبوط بنانے کی پالیسی پرعمل پیرا ہونے کی وجہ سے پاکستان کے عالمی برادری کے ساتھ اچھے تعلقات ہیں۔