محکمہ خارجہ کی ترجمان نے کہا کہ شام میں امریکہ کی اولین ترجیح شدت پسند گروپ دولت اسلامیہ کے جنگجوئوں سے نمٹناہے۔

بشارالاسد سے براہ راست مذاکرات نہیں کریں گے: امریکہ
17 مارچ 2015 (11:18)
0

امریکہ نے کہا ہے کہ وہ شامی صدر بشارالاسد سے ہرگز براہ راست مذاکرات نہیں کرے گا۔واشنگٹن میں صحافیوں سے باتیں کرتے ہوئے محکمہ خارجہ کی ترجمان جین ساکی نے کہا کہ امریکہ اس ضرورت کو تسلیم کرتا ہے کہ بحران کے حل سے متعلق کسی بھی مذاکرات میں صدر اسد کی حکومت کے نمائندوں کو شرکت کرنی چاہئے تاہم بشارالاسد کا شام میں کوئی مستقبل نہیں ہے۔
انہوں نے کہا کہ شام میں امریکہ کی اولین ترجیح شدت پسند گروپ دولت اسلامیہ کے جنگجوئوں سے نمٹناہے۔