دورے کےدوران وزیراعظم سعودی فرمانرواسلمان بن عبدالعزیز اورایران کے صدر حسن روحانی سے ملاقاتیں کریں گے۔

وزیراعظم ریاض پہنچ گئے
17 جنوری 2016 (17:35)
0

وزیراعظم نواز شریف سعودی عرب اور ایران کے درمیان کشیدگی ختم کرانے کیلئے ریاض روانہ ہوگئے ہیں۔وہ کل ایران کادورہ بھی کریںگے۔دورے کے دوران وزیراعظم سعودی فرمانروا سلمان بن عبدالعزیز اورایران کے صدر حسن روحانی سے ملاقاتیں کریں گے۔نواز شریف دونوں رہنمائوں پرزوردیں گے کہ وہ امت مسلمہ کے وسیع تر مفاد میں اختلافات پرامن طریقے سے حل کریں۔


پاکستان کے سعودی عرب اورایران کے ساتھ گہر ے اوربرادانہ تعلقات قائم ہیں اور اسے دونوں مسلمان ملکوں کے درمیان جاری کشیدگی پر تشویش ہے۔بری فوج کے سربراہ جنرل راحیل شریف اور قومی سلامتی کے مشیر ریٹائرڈ لیفٹیننٹ جنرل ناصر خان جنجوعہ اور وزیراعظم کے معاون خصوصی طارق فاطمی پرمشتمل اعلیٰ سطح کاوفد بھی وزیراعظم کے ہمراہ ہے۔

ادھر معروف سیاستدانوں اور تجزیہ کاروں نے وزیراعظم کے سعودی عرب اور ایران کے دورے کو سراہا ہے۔انہوں نے دونوں مسلمان ملکوں کے درمیان کشیدگی کے خاتمے کیلئے اس دورے کو بروقت اقدام قرار دیا۔انہوں نے امید ظاہر کی کہ پاکستان کی جانب سے ثالثی کی کوششوں سے صورتحال کو معمول پر لانے میں مدد ملے گی۔


انہوں نے وزیراعظم کے اس دورے کو پوری امت مسلمہ کے بہترین مفاد میں ایک دانشمندانہ قدم قرار دیا ۔انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کے جراتمندانہ اقدام سے امت مسلمہ میں اتحاد کو فروغ ملے گا۔

ان سیاستدانوں اور تجزیہ کاروں کے مطابق جزیرہ نما عرب کے دونوں ملکوں کے درمیان موجودہ کشیدگی کے خاتمے کیلئے پاکستان کی کوششوں کے مثبت نتائج برآمد ہوں گے۔وزیراعظم کے اس فیصلے کا خیر مقدم کرنے والوں میں سینیٹ کی خارجہ امور سے متعلق کمیٹی کے چیئرمین مشاہد حسین سید، عوامی نیشنل پارٹی کے ترجمان زاہد خان، سینیٹر تاج حیدر، جماعت اسلامی کے امیر سراج الحق ، جمعیت العلمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن ، جمعیت اہلحدیث کے سربراہ پروفیسر ساجد میر، سابق سفیر فوزیہ نسرین اور تجزیہ کار رسول بخش رئیس ، طلعت مسعود اور ریٹائر بریگیڈیئر محمود شاہ شامل ہیں۔