وزیر داخلہ نے کہا ہے کہ وہ کارکنوں کی گرفتاریوں اور ہراساں کرنے کے بارے میں ایم کیو ایم کے تحفظات دورکرنے کے لئے ڈی جی رینجرز اور سندھ حکومت کے ساتھ بات چیت کریں گے۔

قومی اسمبلی : سپیکرکونیب آرڈینینس1999 کے جائزہ کیلئے20رکنی کمیٹی تشکیل دینے کااختیار
17 اگست 2016 (15:12)
0

قومی اسمبلی نے آج ایک تحریک کی منظوری دی جس میں سپیکر قومی اسمبلی کو اختیار دیاگیا کہ چیئرمین سینٹ اور پارلیمانی پارٹیوں کے رہنمائوں کی مشاورت سے بیس رکنی کمیٹی تشکیل دیں جو نیب آرڈی نینس1999 کا جائزہ لے اور ضروری ترامیم کے لئے سفارشات پیش کرے۔یہ تحریک وزیر قانون زاہد حامد نے پیش کی تھی۔
وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان نے اقبال محمد علی کے ایک نکتہ اعتراض کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ وہ کارکنوں کی گرفتاریوں اور ہراساں کرنے کے بارے میں ایم کیو ایم کے تحفظات دورکرنے کے لئے ڈی جی رینجرز اور سندھ حکومت کے ساتھ بات چیت کریں گے۔
انہوںنے اس سلسلے میں کل تک کی مہلت لیتے ہوئے کہا کہ وہ ایوان میں رپورٹ پیش کریں گے۔اجلاس غیر معینہ مدت کے لئے ملتوی کردیا گیا ہے۔