نوازشریف نے کہاہے کہ مسئلہ کشمیر سمیت پاکستان اور بھارت کے درمیان تمام تصفیہ طلب مسائل کے حل کیلئے پائیدار مذاکرات ہی آگے بڑھنے کا واحد راستہ ہیں۔

پاکستان مسئلہ افغانستان کے حل کیلئے عالمی برادری کیساتھ مل کر کام کرنے کو تیار ہے:وزیراعظم
17 اپریل 2017 (15:32)
0

وزیراعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ پاکستان خطے اور دنیا میں امن و استحکام کے فرو غ کے لئے امریکہ کے ساتھ پائیدار اورباہمی مفاد پر مبنی شراکت داری کا خواہاں ہے ۔وہ آج اسلام آباد میں امریکہ کے قومی سلامتی کے مشیر لیفٹیننٹ جنرل ایچ آر مک ماسٹر سے گفتگو کررہے تھے۔ وزیراعظم نے پرامن ہمسائیگی کے عزم کا اعادہ کیا اورامریکی قومی سلامتی کے مشیر کو افغانستان اوربھارت کے ساتھ تعلقات بہتر بنانے کے لئے پاکستان کی طرف سے کئے گئے اقدامات کے بارے میں بتایا۔

نوازشریف نے کہاکہ پاکستان افغانستان کے مسئلے کے حل کیلئے عالمی برادری کے ساتھ مل کرکام کرنے کے لئے تیار ہے ۔بھارت کے ساتھ تعلقات کے حوالے سے وزیراعظم نے اس موقف کا اعادہ کیا کہ مسئلہ کشمیر سمیت پاکستان اور بھارت کے درمیان تمام تصفیہ طلب مسائل کے حل کے لئے پائیدار مذاکرات اور بامعنی رابطے ہی آگے بڑھنے کا واحد راستہ ہیں۔انہوں نے پاکستان اوربھارت کی تنازعات خصوصاً کشمیر کے مسئلے کے حل میں مدد کرنے کیلئے صدر ٹرمپ کی آمادگی کا خیرمقدم کیا۔
وزیراعظم نے کہاکہ ان کی حکومت نے انتہا پسندی اوردہشت گردی سے نمٹنے کے لئے مکمل اتفاق رائے پیدا کیا ہے ۔انہوں نے کہاکہ معیشت میں ڈھانچہ جاتی اصلاحات نے اعتدال پسند، ترقی پذیر اور اسلامی جمہوریہ کی بنیاد فراہم کی ہے جو امریکہ اوردنیا کے ساتھ مل کرکام کرنے کوتیار ہے ۔
جنرل مک ماسٹر نے وزیراعظم کو صدر ٹرمپ کی طرف سے نیک خواہشات کا پیغام پہنچایا۔
انہوں نے وزیراعظم کو یقین دلایا کہ نئی امریکی انتظامیہ پاکستان کے ساتھ دوطرفہ تعلقات کو مضبوط بنانے کیلئے پرعزم ہے تاکہ افغانستان اور جنوب ایشیائی خطے میں امن و استحکام کا ہدف حاصل کیا جاسکے۔