Friday, 15 November 2019, 04:54:49 am
وزیراعظم کا 100ارب روپے مالیت کے کامیاب جوان پروگرام کا افتتاح
October 17, 2019

وزیراعظم عمران خان نے ملک میں میرٹ اور دیانتداری کے کلچر کے فروغ کیلئے اپنی حکومت کے عزم کا اعادہ کیا ہے ۔

انہوں نے جمعرات کی شام اسلام آباد میں تحریک انصاف کی حکومت کے اہم منصوبوں میں سے ایک کامیاب جوان پروگرام کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ نوجوان پاکستان کا مستقبل ہیں اورہماری قسمت کا انحصار ان پر ہے ۔انہوں نے کہاکہ تحریک انصاف کی حکومت میرٹ اورشفافیت پریقین رکھتی ہے اور کامیاب جوان پروگرام کا خلاصہ میرٹ کا پروگرام ہے ۔عمران خان نے کہا دنیا میں وہی قومیں ترقی کرتی ہیں جو میرٹ پر عمل کرتی ہیں ۔انہوں نے کہاکہ حضوراکرم ۖ کی جانب سے ریاست مدینہ کے قیام کے نتیجے میں مسلمانوں نے دنیا پر ایک ہزار سال سے زائد حکومت کی انہوں نے کہاکہ میرٹ ، سچائی اور دیانتداری ریاست مدینہ کی خوبیاں تھیں جن کے باعث وہ کامیاب ہوئی ۔وزیراعظم نے کہاکہ دنیا میں مسلمانوں کی ناکامی کی بڑی وجہ بادشاہت کو اپنانا اور معاشرے کو جمہوری حقوق سے محروم رکھنا تھا ۔عمران خان نے کہاکہ مغل سلطنت اس لئے ناکام ہوئی کہ اس نے میرٹ کا اصول نہیں اپنایا ۔انہوں نے نوجوانوں پرزوردیا کہ وہ حضرت محمد ۖ کی حیات طیبہ کے بارے میں پڑھیں جو پوری دنیا کیلئے مشعل راہ ہے ۔انہوں نے تمام فریقوں کو ملک میں جوان پروگرام کے پہلے مرحلے کے آغاز پر مبارک باد دی ۔عمران خان نے کہاکہ ملک کے جوانوں کیلئے یوتھ سکلز فاونڈیشن قائم کی جائے گی اور وہ ذاتی طورپر پروگرام کی پیشرفت کی نگرانی کریںگے۔

نوجوانوں کو کاروباری تجاویز پرکام کرنے میں مدد اور رہنمائی کیلئے دوسوتجاویز آن لائن بھی فراہم کی گئی ہیں۔پروگرام کے تحت دس ارب روپے فنی تعلیم پرخرچ کیے جائیںگے اور نوجوانوں کو جدید فنی مہارتیں سکھانے کیلئے ایک سوسمارٹ لیبارٹریاں بھی قائم کی جائیںگی ۔پروگرام کے تحت پچیس ہزار نوجوانوں کو صنعتی شعبے میں تربیت کے مواقع فراہم کیئے جائیںگے ۔مدارس میں بھی 500 سکل لیبارٹریاں قائم کی جائیںگی ۔ملکی معیشت میں خواتین کی شمولیت میں اضافے کی غرض سے ان کیلئے پچیس فیصد کوٹہ مختص کیاگیا ہے کامیاب جوان پروگرام نوجوانوں کی ترقی کے قومی پروگرام کے تحت تیار کیاگیا ہے اور ملک کے نوجوانوں کو بااختیاربنانے میں یہ سنگ میل ثابت ہوگا ۔پروگرام بے روزگاری اور غربت کے مسائل سے نمٹنے میں مددگار ثابت ہوگا ، شفافیت اور درخواستوں کی جدید چھان بین کیلئے ایک مربوط نظام تشکیل دیاگیا ہے۔