File Photo

کشمیر ایک زمینی تنازعہ نہیں بلکہ سیاسی مسئلہ ہے: مشترکہ حریت قیادت
16 ستمبر 2017 (19:23)
0

مقبوضہ کشمیر میں مشترکہ حریت قیادت نے کہا ہے کہ کشمیر ایک زمینی تنازعہ نہیں بلکہ ایک انسانی اور سیاسی مسئلہ ہے جسے پاکستان، بھارت اور حقیقی کشمیری قیادت کے درمیان بات چیت کے ذریعے حل کیا جاسکتا ہے۔
حریت رہنمائوں سید علی گیلانی ، میرواعظ عمر فاروق اور یاسین ملک نے سرینگر میں ایک اجلاس کے بعد جاری بیان میں کہا کہ بھارت مذاکرات کے لیے سازگار ماحول پیداکرنے کے بجائے کشمیریوں کے خلاف فوجی طاقت کومزید مضبوط بنا رہا ہے۔
انہوں نے کہا کہ اس فوجی طاقت کے استعمال کے باعث کشمیری قتل، معذور، بصارت سے محروم اور زخمی ہو رہے ہیں جبکہ سیاسی کارکنوں کو جیلوں میں نظر بند کر دیا گیا ہے ۔
ادھر بھارتی فوجیوں نے ریاستی دہشت گردی کی تازہ کارروائی کے دوران آج ضلع کپواڑہ میں دو کشمیری نوجوان شہید کردیے۔
فوجیوں نے ان نوجوانوں کو ضلع کے علاقے مژھل میں ایک آپریشن کے دوران شہید کیا۔
دریں اثناء جموں کشمیر لبریشن فرنٹ (ر) نے بھارت اور مقبوضہ کشمیر کی مختلف جیلوں میں قید کشمیری سیاسی قیدیوں کی حالت زار پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔
پارٹی کے چیف پیٹرن بیرسٹر عبدالمجید ترمبو نے سرینگر میں ایک بیان میں جیل انتظامیہ کی طرف سے غیر قانونی طور پر زیر حراست پارٹی چیئرمین فاروق احمد ڈار کو تہاڑ جیل میں اپنے اہل خانہ سے ملاقات کی اجازت نہ دینے کی مذمت کی۔