دونوں رہنمائوں نے اتفاق کیا کہ مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کیا جانا چاہیے۔

پاکستان اور ترکی تجارتی تعاون بڑھانے پر متفق
16 نومبر 2016 (19:26)
0

پاکستان اور ترکی نے تجارتی اور دفاعی شعبوں میں تعاون بڑھانے پر اتفاق کیا ہے۔ یہ اتفاق ِ رائے بدھ کی رات اسلام آباد میں صدر ممنون حسین اور ان کے ترک ہم منصب رجب طیب اردوان کے درمیان ملاقات میں ظاہر کیا گیا۔ دونوں صدوُر نے معاونین کے بغیر ملاقات کی جس کے بعد وفود کی سطح پر بات چیت ہوئی۔
صدر ممنون حسین نے پاکستان کی نیوکلیئر سپلائرز گروپ کی رکنیت کے لیے زبردست حمایت کرنے پر ترکی کا شکریہ ادا کیا ۔ انہوں نے پاکستا ن اور ترکی کے درمیان دفاعی تعاون کے جامع اور طویل مدت معاہدے کی تجویز دی جس سے معز ز مہمان نے اتفاق کیا۔ انہوں نے پاکستان کی آبدوزوں کی بہتری کیلئے ترکی کے تعاون اور ترکی کے پاکستان سے سپر مشاق تربیتی طیارے کے حصول پر اطمینان کا اظہار کیا۔
اس موقع پر رجب طیب اردوان نے کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان دو طرفہ دفاعی تعاون میں آنے والے دنوں میں مزید اضافہ ہو گا۔ صدر ممنون حسین نے قبرص کے بارے میں ترکی کے موقف کی حمایت کا اعادہ کیا اورتوقع ظاہر کی کہ یہ مسئلہ جلد حل کرلیاجائے گا۔ انہوں نے مختلف شعبوں میں دوطرفہ روابط بڑھانے کی ضرورت پرزوردیا۔
ممنون حسین نے ترکی کے سرمایہ کاروں کو پاکستان کے توانائی اور بنیادی ڈھانچے کے منصوبوں میں سرمایہ کاری کرنے کی دعوت دی۔
دونوں رہنمائوں نے اتفاق کیا کہ مسئلہ کشمیر کو اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل کیا جانا چاہیے۔ دونوں رہنمائوں نے ہر قسم کی دہشتگردی کی مذمت کی اور اس کے خاتمے کیلئے ایک دوسرے سے تعاون کرنے کے عزم کا اعادہ کیا۔