Tuesday, 22 September 2020, 09:36:41 am

مزید خبریں

 
بھارتی فوجیوں کی ریاستی دہشتگردی کی تازہ کارروائی، دو کشمیری نوجوان شہید
September 17, 2020

غیر قانونی طور پر بھارت کے زیر قبضہ جموں وکشمیر میں بھارتی فوجیوں نے اپنی ریاستی دہشت گردی کی تازہ کارروائیوں کے دوران ضلع بارہمولہ میں دو اورکشمیری نوجوانوں کو شہید کر دیا جن میں سے ایک نوجوان کو حراست کے دوران شہید کیا گیا ۔

عرفان احمد نامی ایک کشمیری نوجوان کو سوپور کے علاقے تجر شریف میں ایک چھاپے کے دوران گرفتار کیاگیا تھاجسے بعدازاں پولیس نے حراست کے دوران شہید کردیا۔
قصبے میں بھارت مخالف مظاہروں کو روکنے کیلئے قابض انتظامیہ نے انٹرنیٹ سروس معطل کردی شہید نوجوان کے اہلخانہ نے عرفان کے دوران حراست قتل کی غیر جانبدارانہ تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔
بھارتی فوجیوں نے بارہمولہ ، کپواڑہ ، بانڈی پورہ ، گاندربل ، پلوامہ ، شوپیاں، راجوری اور سامبا کے علاقوں میں فوجی کارروائیوں کے دوران متعدد نوجوانوں کو گرفتار کر لیا۔
میرواعظ عمرفاروق کی زیر قیادت حریت فورم نے آج سرینگر سے جاری ایک بیان میں کہا ہے کہ بھارتی پارلیمنٹ میں مودی حکومت کایہ بیان کہ بھارت کے زیر تسلط جموں وکشمیر میں کوئی بھی گھر میں نظربند نہیں ہے حیران کن ، جھوٹ پر مبنی اور من گھڑت ہے۔
فورم نے کہاکہ اس کے چیئرمین میر واعظ عمر فاروق گزشتہ سال 5اگست سے مسلسل گھر میں نظربند ہیں اور اگر وہ نظربند نہیں ہیں تو انہیں گھر سے باہر آنے کی اجازت کیوں نہیں دی جارہی۔
سینئر حریت رہنما پروفیسر عبدالغنی بٹ نے سرینگر میں میر واعظ عمر فاروق کی رہائش گاہ پر ان سے ملاقات کے موقع پر کہا کہ جنوبی ایشیا میں خطرناک صورتحال بن گئی ہے کیونکہ اب تنازعہ کشمیر میں تین ایٹمی طاقتیں براہ راست ملوث ہیں۔
مولوی بشیر احمدعرفانی، سید بشیر اندرابی ، خواجہ فردوس ، یاسمین راجہ اور شاہین اقبال پر مشتمل کل جماعتی حریت کانفرنس کا ایک وفد اظہار غیر قانونی طوپرنظربند حریت رہنما امیر حمزہ کے گھربانڈی پورہ گیااور گرفتار رہنماء کی فوری رہائی کا مطالبہ کیا۔حریت رہنماؤں ، شبیر احمد ڈار اور وسیم احمد اور انسانی حقوق کے کارکن محمد احسن اونتوپر مشتمل ایک اور وفد نے اس موقع پر بھارت کے زیر قبضہ جموں وکشمیر میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں پر مودی حکومت کو تنقید کا نشانہ بنایا۔
آرگنائزیشن آف کشمیر کوئلیشن نے جنیوا سے جاری ایک بیان میں بھارت کے غیرقانونی زیرتسلط جموں وکشمیر میں میں انسانی حقوق کی سنگین صورتحال پر اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کی ہائی کمشنر مشیل بیچلیٹ کے بیان کا خیر مقدم کیا ہے۔
ترکی نے جنیوا میں اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے 45 ویں اجلاس میں ایک بیان میں بھارتی حکومت سے غیر قانونی طورپر ا س کے زیر قبضہ جموں و کشمیر میں پابندیاں ختم کرنے کا مطالبہ دہرایا۔