پاکستان نے عالمی عدالت انصاف میں اپنے دلائل میں کہاکہ ویانا کنونشن کے تحت عدالت کو ایسا مقدمہ سننے کا اختیار نہیں۔

 کلبھوشن کیس،پاکستان نے عالمی عدالت انصاف کا دائرہ اختیار چیلنج کر دیا
15 مئی 2017 (19:27)
0

پاکستان نے کلبھوشن یادیو کی سزاسے متعلق بھارتی درخواست عالمی عدالت انصاف کے دائرہ اختیار کو چیلنج کردیا ہے۔
دفتر خارجہ میں جنوبی ایشیاء کے امور کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر فیصل نے ہالینڈ کے شہر ہیگ میں عالمی عدالت انصاف میں اپنے دلائل میں کہا کہ ویانا کنونشن کے مطابق اس عدالت کو ایسا مقدمہ سننے کا اختیار نہیں ہے۔
انہوں نے کہا کہ بھارتی بحریہ کے کمانڈر کلبھوشن یادیو کو پاکستانی فورسز نے بلوچستان میں ایک کارروائی کے دوران گرفتار کیا اور اس نے کئی بے گناہ پاکستانیوں کی ہلاکت کا اعتراف کیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ بھارتی جاسوس کو تمام ضروری قانونی ضوابط پورے کرنے کے بعد سزائے موت سنائی گئی اور اسے الزامات کا دفاع کیلئے وکیل تک رسائی بھی دی گئی۔
ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ جاسوسوں کو قونصلر رسائی کا حق حاصل نہیں ہوتا اور بھارت عدالت میں کلبھوشن یادیو کے حق میں ثبوت پیش نہیں کر سکا۔
ڈاکٹر فیصل نے کہا کہ بھارتی جاسوس جعلی بھارتی پاسپورٹ پر پاکستان میں سفر کررہا تھا اور یادیو کی جاسوسی کی سرگرمیوں کے بارے میں پاکستان نے بھارت کو مطلع کیا تھا۔
عالمی عدالت انصاف کے پاکستان کی جانب سے بھارتی جاسوس کلبوشن یادیو کی سزا کے خلاف بھارتی درخواست کے حوالے سے فیصلہ محفوظ کرلیا ہے۔