Friday, 15 November 2019, 05:11:14 am
پاکستان میں سعودی عرب کے 14.5 ارب ڈالر لاگت کے توانائی و پٹرولیم منصوبوں پر کام شروع
October 15, 2019

پاکستان میں سعودی عرب کے ساڑھے چودہ ارب ڈالر لاگت کے توانائی اور پٹرولیم کے منصوبوں پر کام شروع ہوگیا ہے۔عرب نیوز کے ساتھ ایک انٹرویو میں توانائی اور پٹرولیم کے وزیر عمر ایوب خان نے کہا کہ یہ منصوبے تیل اور قابل تجدید توانائی کی پیداوار اور استعمال کو فروغ دینے اور توانائی کی کمی پر قابو پانے کی کوششوں کا حصہ ہیں۔انہوں نے کہا کہ توانائی کے شعبے میں سعودی عرب بلوچستان میں ساڑھے چار ارب ڈالر مالیت کے پانچ سو میگاواٹ کے قابل تجدید توانائی کے منصوبوں کے قیام میں پاکستان کی مدد کررہا ہے۔سعودی کمپنی ایکوا پاور' پاکستانی نیشنل ٹرانسمیشن اینڈDespach کمپنی اور دیگر ممتاز کمپنیوں نے اس کا مطالعہ کیا ہے جس کا مقصدHybrid یا شمسی منصوبوں کے آغاز پر غور کرنا ہے۔انہوں نے کہا کہ گوادر کے تیل صاف کرنے کے منصوبے کے لئے تکنیکی ماہرین کی خدمات حاصل کرنے کا عمل شروع ہوگیا ہے اور آئندہ تین ماہ میں مکمل ہوگا۔توانائی کے وزیر نے کہا کہ تیل صاف کرنے کے منصوبے کے ذریعے یومیہ ڈھائی سے تین لاکھ بیرل تیل صاف کیا جائے گا جس سے پاکستان کو اپنے خام تیل کی برآمد کے سالانہ بل کو تقریباً تین ارب ڈالر تک کم کرنے میں مدد ملے گی۔عمر ایوب نے کہا کہ یہ پاکستان میں سعودی سرمایہ کاری کا پہلا مرحلہ ہے اور جیسے ہی اہداف حاصل ہونا شروع ہوں گے سرمایہ کاری کا اگلا مرحلہ شروع ہوگا۔وزیر توانائی نے کہا کہ سعودی سرمایہ کاری سے پاکستان کو اپنی توانائی کی 30 فیصدضروریات2030 تک قابل تجدید توانائی پر منتقل کرنے کا ہدف حاصل کرنے میں مدد ملے گی۔انہوں نے کہا کہ آرامکو پہلے ہی پاکستان میں سمندر کے ساتھ ساتھ کھدائی کے کام میں مصروف ہے اور ہم سرمایہ کاری کے لئے پاکستان میں مزید سعودی کمپنیوں کا خیر مقدم کریں گے۔