Thursday, 12 December 2019, 07:11:25 pm
ایکنک نےداسو پن بجلی منصوبے کی حصول اراضی،تعمیرکی لاگت پرنظرثانی کی منظوری دی
July 15, 2019

قومی اقتصادی کونسل کی ایگزیکٹو کمیٹی نے داسو پن بجلی منصوبے کی حصول اراضی اور تعمیر کی لاگت پر نظرثانی کی منظوری دی ہے۔

ایکنک کا اجلاس پیر کے روز اسلام آباد میں مشیر خزانہ ڈاکٹر عبد الحفیظ شیخ کی صدارت میں ہوا۔

مشیر خزانہ نے وزارت قانون کو ایک ہفتے کے اندر اپنی رائے دینے کی ہدایت کی تاکہ مزید تاخیر سے گریز کیا جاسکے۔ عالمی بینک اور واپڈا کے اشتراک سے یہ منصوبہ دو مرحلوں میں مکمل ہوگا جس سے چار ہزار تین سو بیس میگاواٹ بجلی پیدا ہوگی۔

ایکنک نے داسو پن بجلی گھر کے پہلے مرحلے سے دوہزار ایک سو ساٹھ میگاواٹ بجلی براستہ مانسہرہ اسلام آباد تک پہنچانے کیلئے نظرثانی شدہ قیمت نوے ارب تراسی کروڑ سولہ لاکھ روپے سے زائد کی منظوری دی۔تخمینے میں یہ نظرثانی روپے میں قدر کی تبدیلی کے باعث کی گئی ہے۔

کمیٹی نے مانسہرہ میں بالاکوٹ پن بجلی منصوبے کی تعمیر کی بھی منظوری دی جس کی نئی لاگت پچاسی ارب اکیانوے کروڑ انتیس لاکھ روپے سے زائد ہے۔

یہ منصوبہ خیبرپختونخوحکومت کی نگرانی میں مکمل کیا جائے گا۔ منصوبے کے لئے اسی فیصد رقم ایشیائی ترقیاتی بینک جبکہ بیس فیصد خیبرپختونخوا حکومت فرا ہم کرے گی۔

چیئرمین نے سرکاری شعبے کے بجلی گھروں کے نرخ مقرر کرنے کیلئے نیپرا میں درخواست دائر کرنے کے معاملے پر ایک کمیٹی تشکیل دے دی۔

کاسا1000 منصوبے کے تحت پاکستان اور تاجکستان کے درمیان پانچ سو کلوواٹ ٹرانسمیشن لائن بچھانے کا جائزہ لیا گیا اور چیئرمین نے وزارت منصوبہ بندی کو ہدایت کی کہ وہ متعلقہ فریقوں سے مشاورت کے بعد یہ منصوبہ دوبارہ ایکنک کے اجلاس میں پیش کرے۔

ایکنک نے بارہ سو تئیس میگاواٹ کے ضلع قصور میں بلوکی بجلی گھر اور ضلع جھنگ میں بارہ سو تیس میگاواٹ کے حویلی بہادر شاہ بجلی گھر کے منصوبوں کی منظوری دی۔

ایکنک نے پانچ ارب اکاسی کروڑ بیس لاکھ روپے سے زائد کی لاگت سے دوسو بیس کے وی کے ہیڈ فقیریاں گرڈ سٹیشن اور ہیڈ فقیریاں لڈے والا تک دوسو کے وی کی سرکٹ ٹرانسمیشن لائن کی بھی منظوری دی۔

ایکنک نے پاکستان انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز میں ماں اور بچے کے صحت مرکز اور بچوں کے ہسپتال میں انتہائی نگہداشت کے شعبے کے لئے چار ارب ستائیس کروڑ روپے سے زائد کی بھلی منظوری دی۔

اجلاس میں سترہ ارب روپے کی لاگت سے خیبرپختونخوا کے صحت کی ترقی کے مربوط منصوبے کی منظوری دی گئی۔

ایکنک نے 29 ارب پچاس کروڑ روپے کی لاگت سے راولپنڈی کے علاقے چکری میں پاکستان سپیس سنٹر کے قیام کی منظوری دی۔

ایکنک نے 63 ارب ساٹھ کروڑ روپے سے زائد کی لاگت سے قومی شاہراہ این پچاس کے کچلاک۔ ژوب سیکشن کو دو رویہ کرنے کی بھی منظوری دی۔

اجلاس میں حکومت سندھ اور عالمی بینک کے اشتراک سے کراچی شہر کے منصوبے کے لئے تینتیس ارب ساٹھ کروڑ روپے کی بھی منظوری دی گئی۔

اس میں بتیس ارب روپے سے زائد کا عالمی بینک کاقرض بھی شامل ہے۔